• ورلڈ الیون پاکستان آئی، پوری دنیا کیلئے پیغام ہے پاکستان پرامن ملک ہے، انضمام الحق
  • ملکہ ترنم نور جہاں کو گوگل نے ان کی یوم پیدائش کے موقع پر زبر دست خراج عقیدت پیش
  • شیخ رشید کی اربوں روپے کی کرپشن ثابت کریں گے، شکیل اعوان
  • اسحاق ڈار نے منی لانڈرنگ کرکے ملک کی عزت کو نقصان پہنچایا، شیخ رشید
  • رپورٹ کو فوری طور پر ریلیز کیا جائے تاکہ انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں، عدالت
  • امید ہے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی پاکستان میں تعلیم کے چمپیئن ثابت ہونگے، ملالہ یوسف زئی
  • عمران خان گومل یونیورسٹی کا دورہ کریں گے
  • طلباء کو صنعتوں اور دیگر اداروں میں آپرینٹس شپ پروگرام کے تحت تربیت دی جائیگی
  • وزیر اعظم کی امریکی کمپنیوں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی دعوت
  • اگرامیدوارعدالت سے رجوع کرے توNA120 الیکشن دوبارہ ہو سکتا ہے، قانونی ماہرین

جس نے تمہارے لیے زمین کو بچھونا اور آسمان کو چھت بنایا اور آسمان سے پانی اتارا پھر اس سے تمہارے کھانے کے لیے پھل نکالے، سو کسی کو اللہ کا شریک نہ بناؤ حالانکہ تم جانتے بھی ہو۔آیات 286

سی پیک منصوبہ دونوں ممالک کی دوستی کامنہ بولتا ثبوت ہے، بھارتی جریدے کا اعتراف
China One Belt

کراچی(اردو ووز) بھارتی جریدے اکنامسٹ نے بھی اعتراف کیا ہے کہ چینی سر مایہ کاری پاکستان کیلئے سود مند ہے اورسی پیک منصوبہ دونوں ممالک کی دوستی کامنہ بولتا ثبوت ہے۔

بھارتی جریدے کے مطابق ابتدائی طور پر پاک چین راہداری منصوبے کا حجم چھیالیس ارب ڈالر تھا، جو بڑھ کر باسٹھ ارب ڈالر تک جاسکتا ہے، سب سے زیادہ توجہ توانائی منصوبوں اورگوادر پورٹ پردی گئی ہے۔جریدے کی رپورٹ کے مطابق منصوبہ بندی کمیشن کے نائب چیئرمین سرتاج عزیزکا کہنا ہے کہ چینی کمپنیاں پاکستان میں تیس ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کر چکی ہیں، ابتدائی منصوبے سال دوہزار اٹھارہ تک مکمل ہوجائیں گے، سی پیک کے انرجی پیکج کے تحت پاکستان کی بجلی پیداوارمیں سترہ ہزارمیگاواٹ کا اضافہ ہوگا۔اس سے قبل جااپانی جریدے نکئی ایشین ریویو کا کہنا تھا کہ سی پیک پاکستانی معشیت کیلئے سب سے اہم ہے، چینی سرمایہ کاری پاکستانی معیشت کی شرح نمومیں اضافے کا باعث بنے گی۔یاد رہے چین اور پاکستان کے مشترکہ تعاون سے سی پیک معاہدہ شروع کیا گیا ہے، جس کے تحت گوادر میں بندر گاہ اور اقتصادی راہداری کے منصوبے شامل ہیں، معاشی ماہرین نے منصوبہ شروع ہونے سے قبل ہی اس منصوبے کو پاکستان کے حق میں قرار دیا تھا۔ماہر ین کے مطابق سی پیک کی تکمیل سے پاک چین اقتصادی رابطوں اور باہمی تجارت میں مزید استحکام آئے گا، جس سے قومی برآمدات کے فروغ میں مدد ملے گی اور اقتصادی راہداری منصوبے سے چین کے علاوہ خطے کے دیگر ممالک کے ساتھ بھی اقتصادی رابطوں میں اضافہ سے قومی معیشت کی ترقی میں مدد ملے گی۔

مزید خبریں