• پاکستان کا کابل میں دو مساجد میں ہونے والے خودکش حملوں کے نتیجے میں انسانی جانی نقصان پر دکھ اور افسوس کا اظہار
  • مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیں اتارے جانے کے دن 27 اکتوبر کو ملک بھر میں یوم سیاہ کے طور پر منایا جائیگا
  • سری لنکن ٹیم پر حملہ پولیس کی سستی کی وجہ سے ہوا تھا‘ آئی جی پنجاب
  • پی سی بی کا اسپاٹ فکسنگ کی پیشکش کامعاملہ آئی سی سی کے سپرد
  • میانمار حکومت روہنگیا مسلمانوں کو مظالم سے بچانے میں ناکام رہی، اقوام متحدہ
  • ایران ایٹمی ڈیل کی خلاف ورزی نہیں کر رہا، آئی اے ای اے
  • وزیر اعظم سے ترکی کے وزیر توانائی وقومی وسائل بیرت البیراک کی ملاقات
  • امریکی وزیرخارجہ کا غیر ملکی دورے کا آغاز ٗ پاکستان کا دورہ بھی کریں گے
  • بھارت نے پاکستان سے کلبھوشن کے معاملے پر نظر ثانی کا مطالبہ کردیا
  • سعودی ولی عہد نے ذاتی جیب سے حائل کیلئے 50لاکھ ریال عطیہ کردیئے

جس دن اس (سونے، چاندی اور مال) پر دوزخ کی آگ میں تاپ دی جائے گی پھر اس (تپے ہوئے مال) سے ان کی پیشانیاں اور ان کے پہلو اور ان کی پیٹھیں داغی جائیں گی.(سورۃ التوبۃ)آیت نمبر 35

نواز شریف کاچیئرمین سینیٹ کی تجاویز سے اتفاق، کسی بھی نئے آئین و قانون کی تیاری کیلئے ساتھ دینےکاعندیہ
Nawaz shareef

لاہور(نیوز ڈیسک) سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف نے سینیٹ میں پیپلز پارٹی کے چیئرمین رضا ربانی کی تجاویز سے اتفاق اور کسی بھی نئے آئین و قانون کی تیاری کیلئے ساتھ دینے کا واضح عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ چار روز کے سفر کے دوران جو جذبات دیکھے ہیں یہ انقلاب کا پیشہ خیمہ ہیں، اگر ملک میں انقلاب نہ آیا تو غریب ہمیشہ غریب ہی رہے گا، انقلاب نہ آیا تو غریبوں کے گھر میں خوشحالی نہیں آئے گی، کون ہیں جو پاکستان کے ساتھ ظلم کرتے ہیں؟ انہیں احساس ہونا چاہیے، جنہوں نے ستر سال سے پاکستان کے ساتھ کھیل کھیلا ہے تماشہ کیا ہے کیا ان کا احتساب ہونا چاہیے یا نہیں؟ میں ڈرتا نہیں ہوں نہ گھر میں بیٹھوں گا اورمیں اس وقت تک گھر میں نہیں بیٹھوں گا جب تک پاکستان اور عوام کی تقدیر نہیں بدل جاتی، عوام کو جرات کے ساتھ سٹینڈ لینا ہوگا ورنہ پاکستان ادھورا رہ جائے گا، جب تک ملک میں بنیادی نظام ٹھیک نہیں ہوتا یہ آگے نہیں بڑھ سکتا اور پاکستان تماشہ بنا رہے گا، ہمیں پاکستان کو ٹھوکروں سے بچانا ہے تماشے اور مذاق سے بچانا ہے، بہت جلد پروگرام دوں گا، مجھے یقین ہے کہ آپ نواز شریف کا بھرپور ساتھ دیں گے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلا م آباد سے لاہور پہنچنے پر داتا دربار کے باہر مرکزی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ہزاروں کی تعداد میں کارکن اور عوام ان کے استقبال کے لئے موجود تھے۔ نواز شریف نے کہا کہ لاہور کے غیور باسیوں میرا اسلام قبول کرو، یہ آج میں لاہور میں کیا دیکھ رہا ہوں، یہ منظر پہلے کبھی نہیں دیکھا۔ لاہور کے غیور باسیوں آپ نے مجھے وزیر اعظم بنا کر اسلام آباد بھیجا تھا، بھیجا تھا یا نہیں؟ آپ نے مجھے اپنے ووٹ کی طاقت سے وزیر اعظم بنایا اور پانچ لوگوں نے مجھے نااہل قرا ردیدیا آپ کو یہ فیصلہ منظور ہے؟ 2013ء میں آپ نے مجھے ووٹ دیا اور کہا کہ نواز شریف بجلی نہیں آتی، پنکھا نہیں چلتا چولہا نہیں جلتا، میں نے کہا کہ انشا اللہ اللہ کے فضل سے پنکھا بھی چلے گا اور چولہا بھی جلے گا، گاؤں گاؤں روشنی آئے گی ۔ چوتھا سال ہے بجلی آنا شروع ہو گئی ہے، گیس بھی آنا شروع ہو گئی ہے، یہاں میٹرو بس چل رہی ہے، اورنج لائن تقریباً تیار ہو چکی ہے۔ غریبوں کو کتنی سہولت ملی ہے، غریب کی بیٹی میٹرو بس میں بیٹھ کر سکول اور کالج جاتی ہے، غریب آدمی بیس سے پچیس روپے میں پورے شہر کا سفر کرتا ہے جبکہ پہلے سینکڑوں روپے لگتے تھے ، میں صحیح بات کر رہا ہوں یا نہیں؟۔آج اللہ کے فضل سے سڑکیں بن رہی ہیں،ملک خوشحال ہو رہا ہے ترقی عروج پر ہے ،امن قائم ہو چکا ہے اتنے اچھے کام ہو رہے تھے پھر وزیراعظم کے ساتھ یہ سلوک کیا جاتا ہے ؟۔ہمیں یہ منظور نہیں ۔ 1947سے آج تک وزرائے اعظموں کے ساتھ یہی سلوک ہوتا رہا ہے، اوسطاً ہر وزیر اعظم نے صرف ڈیڑ ھ سال کا عرصہ گزارا جبکہ تین ڈکٹیٹرملک کے  تیس سال کھا گئے، لیکن اب یہ نہیں چلے گا، پاکستان کو بدلنا ہوگا۔ اسلام آباد سے یہاں پہنچا ہوں میں نے جو جذبات دیکھے ہیں جو جذبہ یہاں دیکھ رہا ہوں یہ وہ جذبہ ہے جو ایک انقلاب کا پیشہ خیمہ ہے۔ انقلاب نہ آیا تو غریب ہمیشہ غریب ہی رہے گا اگر یہ انقلاب نہ آیا تو کسی کو انصاف نہیں ملے گا، آج 80فیصد آبادی بے گھر ہے میں سو چ رہا تھا کہ ہمیں کیا کرنا چاہیے، میرا یہ ایجنڈا تھا کہ ہم معاشی طو رپر مستحکم ہو رہے ہیں اب نئی سکیم کا اعلان کریں گے، ریاست سستے داموں گھروں کا اعلان کرے گی، یہ پاکستان  20کروڑ عوام کی ملکیت ہے، سر زمین پاکستان کے مالک 20کروڑ ہیں چند لوگ نہیں، کیا بیس کروڑ عوام کو حق ملنا چاہیے حقوق ملنے چاہئیں؟ میں وعدہ کر رہا ہوں موقع دیا تو وہ انقلاب لے کر آئیں گے جس میں تیز ترین اور سستاانصاف ملے گا، ریاست آسان شرائط پر گھر دے گی۔ پاکستان میں ترقی کے سفر کو مزید تیز کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ سینیٹ کے چیئرمین نے جو بیان دیا ہے میں ان کی تجاویز سے اتفاق کرتا ہوں، مسلم لیگ ( ن) سینیٹ میں ان کا ساتھ دے گی اگر وہ نیا آئین و قانون بنانا چاہتے ہیں ان کا ساتھ دیں گے ان کے ساتھ بیٹھیں گے تاکہ یہ کام ابھی شروع کیا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ ایک وزیراعظم کو نکال دیا ہے لیکن آزاد کشمیر کا وزیر اعظم ابھی بھی ہے۔ انشا اللہ مقبوضہ کشمیر آزاد ہوگا اور پاکستان کا حصہ بنے گا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے اسلام آباد سے لاہور تک جو پیار ملا ہے اسے ساری زندگی نہیں بھلاؤں گا۔ میں اپنا پروگرام دوں گا مجھے یقین ہے کہ آپ نواز شریف کا بھرپور ساتھ دیں گے ۔ آپ بلند آواز میں بتائیں کیا انقلابی پروگرام کو سپورٹ کرتے ہیں کیا میرے ساتھ ہیں ؟

مزید خبریں