• سندھ سے چوروں اور لٹیروں کا صفایا کرکے دم لیں گے ٗ اب گو زرداری گو ہونے جارہا ہے ٗعارف علوی
  • بلاول بھٹو زرداری کااسلام آباد میں قیام کا فیصلہ
  • عمران خان غیر ملکی فنڈنگ کی کرپشن میں ملوث ہیں ٗ دانیال عزیز
  • نیا پاکستان تو بھٹو نے بنا کردیا تھا ٗ بلاول بھٹونانا کی سیاست آگے بڑھائیں گے ٗخورشید شاہ
  • منچن آباد پولیس کا کریک ڈاؤن ،موٹرسائیکل چوری کرنیوالا گینگ پکڑا گیا ٗتیرہ موٹر سائیکل بر آمد ٗ مقدمات درج
  • رائے ونڈ میں زہریلی چائے پینے سے چھ افراد کی حالت غیر ہو گئی ‘ ہسپتال منتقل
  • دتہ خیل میں ایک خاتون کے ہاں 5 بچوں کی پیدائش
  • بلوچستان میں سی پیک منصوبے پرعمل درآمد کیلئے محکمہ ریلویز نے اقدامات شروع کردیئے
  • سندھ میں پیپلز پارٹی نے 9سالہ اقتدارمیں لوٹ مار‘کرپشن اور سرکاری ملازمتیں فروخت کرنے کے سوا کچھ نہیں کیا‘ریاض چاندڈیو
  • اوپن یونیورسٹی نے پی ایچ ڈی طلبہ کو پڑھانے کے لئے غیر ملکی ماہرین کو مدعو کرلیا

جس دن اس (سونے، چاندی اور مال) پر دوزخ کی آگ میں تاپ دی جائے گی پھر اس (تپے ہوئے مال) سے ان کی پیشانیاں اور ان کے پہلو اور ان کی پیٹھیں داغی جائیں گی.(سورۃ التوبۃ)آیت نمبر 35

چھری مار کی عدم گرفتاری کراچی میں مخبری نیٹ ورک فعال کرنے کا حکم
KNIFE ATTACK IN KARACHI

کراچی (اردو ووز)گلستان جوہر اور گلشن اقبال میں خوف کی علامت بن جانے والا پراسرار چھری مار ملزم پولیس کیلئے بھی ایک ڈراؤنا خواب بن گیا ہے پولیس ملزم کی گرفتاری کیلئے اپنی سی ہر کوشش کے باوجود بھی تاحال ناکام دکھائی دیتی ہے۔

سندھ پولیس کے اعلی حکام نے ملزم کی گرفتاری میں ناکامی کے بعد تھانوں کی سطح پر مخبری کے نیٹ ورک کو ایک بار پھر فعال کرنے کا حکم دیا ہے اور اس سلسلے میں اسپیشل برانچ پولیس کو بھی چھری مار ملزم کا خصوصی ٹاسک دے دیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق گلستان جوہر اور گلشن اقبال کے علاقوں میں خواتین پر تیز دھار آلے سے وار کرنے والا پراسرار ملزم سندھ پولیس کیلئے ایک ڈراؤنا خواب بن کر رہ گیا ہے۔ پولیس کی تمام ترسرتوڑ کوششوں کے باوجود ملزم کی گرفتاریعمل میں نہیں آسکی ہے۔ گلستان جوہر اور گلشن اقبال میں پولیس کے تقریبا تمام یونٹس کے اہلکار وردی اور سادہ لباس میں 2 4گھنٹے ڈیوٹیاں کررہے ہیں تاہم پولیس کو ملزم کیخلاف کوئی ٹھوس اطلاع نہیں مل رہی جس سے اس کی گرفتاری میں مدد مل سکے۔ تمام صورتحال کے بعد سندھ پولیس کے اعلی حکام نے سندھ پولیس میں تھانوں کی سطح پر مخبری کا نیت ورک ایک بار پھر فعال کرنے کا حکم دیا ہے اور اس سلسلے میں اسپیشل برانچ پولیس کو بھی ملزم کی گرفتاری کا ٹاسک دیتے ہوئے تھانوں کی سطح پر مخبری کا نیٹ ورک قائم کرنے کی ہدایت دیں ہیں۔ اس حوالے سے اسپیشل برانچ کے ایک افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ ماضی میں بھی اسپیشل برانچ کے کردار کو تھانے کی سطح پر بہت محدود کردیا گیا تھا جس کے باعث اس طرح کی صورتحال کا سمانا کرنا پڑرہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اب پولیس حکام کی جانب سے اس طرز کے ملزم کی گرفتاری کیلئے اسپیشل برانچ کو بھی خدمات پیش کرنے کیلئے کہا گیا ہے جس کے بعد اسپیشل برانچ نے بھی ملزم کی تلاش کا عمل شروع کردیا ہے۔

مزید خبریں