حمزہ شہباز کو چیئرمین پبلک اکاونٹس کمیٹی نہ بنانے پر مسلم لیگ (ن )کا احتجاج کا فیصلہ              سپریم کورٹ آف پاکستان کااورنج لائن ٹرین منصوبہ 20 مئی تک مکمل کرنے کا حکم              وفاقی کابینہ کمیٹی برائے توانائی کارمضان المبارک میں سحر اور افطار کے دوران لوڈ شیڈنگ نہ کرنے کا فیصلہ              محکمہ تعلیم بلوچستان نے 549 اساتذہ معطل کردیئے       
تازہ تر ین

آئندہ بجٹ میں فرنیچر کے شعبہ کو مکمل صنعت کا درجہ دینے کے لئے عملی اقدامات کیے جائیں ‘ پاکستان فرنیچر کونسل

لاہور (نیوز ڈیسک)پاکستان فرنیچر کونسل (پی ایف سی) نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں پر زور دیا ہے کہ آئندہ بجٹ برائے مالی سال 2019-20 میں فرنیچر کے شعبہ کو مکمل صنعت کا درجہ دینے، فرنیچر کی برآمدات کے فروغ اور خام مال کی ارزاں نرخوں پر فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے عملی اقدامات کے ساتھ ساتھ ضروری فنڈز بھی مختص کئے جائیں۔ پی ایف سی کے چیف ایگزیکٹو میاں کاشف اشفاق نے ان خیالات کا اظہار بورڈ آف ڈائریکٹرز کی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ فرنیچر کی بہت زیادہ درآمد کی وجہ سے مقامی فرنیچر مینوفیکچررز کو شدید مشکلات اور چیلنجز کا سامنا ہے، چائنیز فرنیچر نے بھی مقامی صنعت کو بری طرح متاثر کیا ہے جس کے نتیجے میں مقامی گھریلو فرنیچر کی فروخت میں واضح کمی آئی ہے۔ اب تھائی لینڈ، کوریا اور دیگر ممالک نے بھی پاکستان کو بڑے پیمانے پر فرنیچر کی برآمد کا آغاز کر دیا ہے جس سے یہ صنعت سخت دباﺅ کا شکار ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ مقامی صنعت کے تحفظ کیلئے فرنیچر کی برآمدات میں اضافہ اور درآمدات کی حوصلہ شکنی کی جائے۔ حکومت مقامی فرنیچر مینوفیکچررز کیلئے مراعاتی پیکیج فراہم کرے تاکہ وہ برآمدات کے حجم کو بڑھانے کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی مارکیٹ میں مقابلہ کرسکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ لکڑی کے سامان اور دستکاری کی مختلف روایتی اشیاءکی برآمدات کی بہت زیادہ گنجائش موجود ہے اور اعلیٰ معیار کی یہ اشیاءنہ صرف مقامی مارکیٹ بلکہ عالمی منڈیوں میں بھی جگہ بنا سکتی ہیں۔ اگر ہم اس میں کامیاب ہو جائیں تو نہ صرف برآمدی حجم اور ورائٹی میں اضافہ ہو گا بلکہ اس سے جی ڈی پی کی شرح میں بھی اضافہ ہو گا اور فرنیچر سازی میں مہارت حاصل کرنے والے افراد کو روزگار کے مواقع بھی میسر آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس صنعت کو تجارتی بنیادوں پر فروغ دینے کے لئے ایک جامع حکمت عملی تیار کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ بہتر ماحول میں کام کرنے سے کارکنوں کی صلاحیت میں بھی اضافہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری برادری کو وزیر اعظم عمران خان سے بڑی امیدیں وابستہ ہیں اور یقین ہے کہ مستقبل کی اقتصادی حکمت عملی کی تیاری سے قبل سٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لے جایا جائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی ایف سی حکومت کی ان تمام اقتصادی پالیسیوں کی بھر پور حمایت کرے گی جن کا مقصد ملک کو موجودہ اقتصادی مشکلات سے نکالنا ہے۔

مزید خبر یں

کراچی (نیوز ڈیسک) پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں اتار چڑھاو کے بعد تیزی غالب آگئی اورکے ایس ای100انڈیکس 59.29پوائنٹس کے اضافے سے36811.86پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیا جب کہ57.27فیصد حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی لیکن اسکے باجود مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت میں25کروڑ33لاکھ روپے ... تفصیل

لاہور (نیوز ڈیسک) کاروباری وفود کے تبادلے تجارتی سرگرمیوں کے اضافے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں،توانائی کے وسائل خصوصی طور پر ایل این جی،کان کنی کے شعبہ اور قابل تجدید توانائی کی فراہمی میں باہمی تجارت کے بہت مواقعے موجود ہیں،آسٹریلیا کی ڈیری سیکٹر کی ... تفصیل

کراچی (نیوز ڈیسک) ملکی زرمبادلہ کے ذخائرایک ارب 3کروڑ24لاکھ ڈالر کی کمی سے16ارب19کروڑ59لاکھ ڈالرکی سطح پرآگئے۔اسٹیٹ بینک کے مطابق12اپریل کو ختم ہونے والے ہفتے کے دوران زرمبادلہ کے ذخائرمیں ایک ارب 3کروڑ24لاکھ ڈالرکی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں ذخائر کی مالیت17ارب 22کروڑ83لاکھ ڈالر ... تفصیل