پشاور دہشتگردی واقعہ میں زخمی ہونے والے لانس نائیک ظفر اقبال شہید              سابق ڈی جی اینٹی کرپشن حسین اصغر کو ڈپٹی چئیرمین نیب لگانے کا فیصلہ              شیخ رشید کا اسد عمر کو منانے کا اعلان              مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے عہدے کی ذمہ داری سنبھال لی              رینٹل پاور ریفرنس میں گرفتار ملزم شاہد رفیع جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے              آمدن سے زائد اثاثے: علیم خان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 30 اپریل تک توسیع              پنجاب حکومت کا بڑا رمضان پیکیج دینے کا اعلان              حکومت ملک میں ویلیو ایڈڈ ٹیکس کے نفاذ کیلئے آئی ایم ایف کی شرط پر رضامند       
تازہ تر ین

ٹیکس ایمنسٹی سکیم سے بیرون ملک چھپائی گئی دولت کو واپس لانے میں مدد ملے گی‘میاں کاشف اشفاق

لاہور(نیوز ڈیسک) پاکستان کے فرنیچر کونسل (پی ایف سی) کے چیف ایگزیکٹو میاں کاشف اشفاق نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے دی جانے والی آئندہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سے بیرون ملک چھپائی گئی دولت کو واپس لانے اور اس کے استعمال سے ملک کی اقتصادی ترقی کی رفتار کو بڑھانے میں مدد ملے گی۔  پی ایف سی ہیڈکوارٹرز میں منعقدہ بورڈ آف ڈائریکٹرز کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ سکیم ٹیکس نیٹ بڑھانے کی کوششوں میں ایک بڑا بریک تھرو ہوگی کیونکہ محصولات کی وصولی مختلف وجوہات کی وجہ سے ہمیشہ دباو¿ میں رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو بہتر اقتصادی اور سماجی خدمات کی فراہمی کے لئے ٹیکس بیس میں اضافہ اور اس کی وصولیوں میں بہتری انتہائی ضروری ہے۔ انہوں نے اس سکیم کو حکومت کی میگا ٹیکس اصلاحات قرار دیتے ہوئے امید ظاہر کی کہ اس سے زیادہ سے زیادہ افراد کو متعلقہ ٹیکس اتھارٹیز کے ساتھ رجسٹرڈ ہونے کا موقع ملے گا۔ موجودہ منتخب حکومت کی نیک نیتی پر شبہ کی گنجائش نہیں، حکومت ایک بار ٹیکس بیس کو وسعت دینے میں کامیاب ہو گئی تو ملک کو آئندہ ایسی ایمنسٹی سکیموں سے چھٹکارا حاصل ہو جائے گا۔ ان کاکہنا تھا کہ حکومت نے اقتصادی شعبے میں کافی پیش رفت کرتے ہوئے اس ضمن میں جرات مندانہ فیصلے کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانیوں کے بیرون ملک پڑے ہوئے اثاثے پاکستان کے لئے بیکار ہیں لیکن اب انہیں ملک میں لا کر استعمال کیا جا سکتا ہے جس سے پاکستان کو بھاری مالی فوائد کا حصول یقینی ہے اور یہ روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنے اور مقامی صنعت کی توسیع و ترقی کے لئے استعمال ہونگے۔ میاں کاشف اشفاق نے روپے کی قدر میں مسلسل کمی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس سے ہر قسم کی کاروباری سرگرمیاں متاثر ہو رہی ہیں لہذا حکومت اس پر قابو پانے کے لئے اقدامات بروئے کار لائے اور تیز رفتار اقتصادی ترقی کے لئے بزنس فرینڈلی پالیسیوں کو فروغ دے۔ انہوں نے کہا کہ پی ایف سی نے متعلقہ حکومتی حکام کو یہ پیغام دیا ہے کہ سٹیک ہولڈرز کی مشاورت کے بغیر کوئی پائیدار اور منافع بخش تجارتی پالیسی نہیں بنائی جا سکتی اور اگر حکومت فرنیچر کے شعبے کو فروغ دینے کے لئے اقدامات کرے گی تو پی ایف سی اس ضمن میں حکومت کی بھر پور حمایت کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ فرنیچر کی صنعت کو تجارتی بنیاد پر فروغ دینے کے لئے جامع حکمت عملی تیار کرنے کی ضرورت ہے جس سے نہ صرف فرنیچر سازوں کو فائدہ ہو گا بلکہ برآمدات بڑھانے میں بھی مدد ملے گی

مزید خبر یں

کراچی(نیوزڈیسک)کراچی کاٹن ایسوسی ایشن کی اسپاٹ ریٹ کمیٹی نے اسپاٹ ریٹ 8800 روپے کے بھا وپر مستحکم رکھا۔کراچی کاٹن بروکرزفورم کے چیئرمین نسیم عثمان نے بتایا کہ رواں سیزن کی روئی ایک کروڑ 8 لاکھ گانٹھوں کے لگ بھگ ہوگی جو گزشتہ سال کی پیداوار 1 ... تفصیل

اسلام آباد (نیوزڈیسک) صدر پاکستان اکانومی واچ ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا ہے ملکی معیشت کو سٹہ بازوں، منافع خوروں اوراقتصادی دھاندلی کے ماہر بزنس مینوں نے ہائی جیک کیا ہوا ہے۔سٹے بازی سب سے زیادہ منافع بخش جبکہ صنعت لگانا مصیبت بن گیا ہے سکی ... تفصیل

کراچی (نیوزڈیسک) یونائٹیڈ بزنس گروپ کے سرپرست اعلیٰ ایس ایم منیر،چیئرمین افتخار علی ملک،سیکریٹری جنرل زبیرطفیل اورمرکزی ترجمان گلزار فیروز نے وزیراعظم عمران کی جانب سے ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ کو ملکی خزانے کا نگراں مقرر کرنے اورمشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ کو وزارت خزانہ،ریونیو اور اقتصادی امور کا ... تفصیل