حکومت کا سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کیلئے اوپن بیلٹ کا فیصلہ
جی 20 سے پاکستان کو قرضوں کی ادائیگی میں 2 ارب ڈالر سے زائد ریلیف ملنے کا امکان
سعودی عرب میں کوڑے مارنے کی سزا کو باضابطہ ختم کردیا گیا
سٹیزن پورٹل سے شہری غیر مطمئن، وزیراعظم کا اداروں کیخلاف تحقیقات کا حکم
کورونا نے پی ٹی آئی کی رکن اسمبلی شاہین رضا کی جان لے لی
ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کو کورونا وباء سے بچاؤ کیلئے 30 کروڑ ڈالر کا قرض فراہم کر دیا
حکومت بلوچستان نے اسمارٹ لاک ڈاؤن میں 2 جون تک توسیع کردی
پاکستان میں 2 ماہ بعد ریلوے آپریشن بحال کر دیا گیا
کرونا وبا،ملک میں 1ہزار سے زائد اموات،مریضو ں کی تعداد47ہزار سے تجاوز کر گئی،13ہزار سے زائدصحتیاب
تازہ تر ین

ریٹیل سیکٹر کی بحالی کے لئے فوری طور پر حکومتی گارنٹی کے ساتھ بلاسود سرمایہ فراہم کیا جائے ‘ چیئرمین پیاف

لاہور( نیوزڈیسک)چیئرمین پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ(پیاف) میاں نعمان کبیر نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کی وجہ سے لاک ڈائون اور اس سے پیدا ہونیوالی صورتحال کی وجہ سے ریٹیل سیکٹر بری طرح متاثر ہوا ہے۔ ریٹیل سیکٹر جو ملکی معیشت کا اہم ستون ہے اور جو کہ اپنی انڈسٹری اور دکانوں سے ملک کے تقریبا دس لاکھ خاندانوں کو روز گار مہیا کر رہے ہیں، حکومت کی عدم توجہی کی وجہ سے برے حالات سے دوچار ہیں اگر حکومت نے ریٹیل سیکٹر کو فوری ریلیف نہ دیا تو بہت بڑا معاشی اور سماجی المیہ ہو سکتا ہے ۔ریٹیلرز ایسوسی ایشن کے مطابق موجودہ صورتحال میں اگر ریٹیلرز کو ١٠ مئی سے کھول دیا جاتا ہے تو اسوقت تک اس سیکٹر کو ٩٠٠ ارب کا نقصان ہو چکا ہو گا اور اسکے علاوہ 1500 ارب کا سامان گوداموں میں پڑا ہے اور تقریباً 500 ارب کا سامان گو داموں میں پڑا ہے ۔ لاک ڈائون کیوجہ سے ریٹیل سیکٹر ابتک بھاری نقصان اٹھا چکا ہے ، سرمایہ کی شدید قلت ہے اور ریٹیل سیکٹر یا مقامی کاروباری اداروں کے لئے کسی بھی قسم کا کوئی اقدام نہیں کیا ۔مذکورہ حالات میں ریٹیل کی دکانیں اور دفاتر خالی ہونے اور کاروبار مختصر ہونے سے بہت سی ملازمتیں بھی ختم ہو جائیں گی جس سے بڑے پیمانے پر بیروزگاری کا خدشہ ہے۔پیاف کے چیئرمین میاں نعمان کبیر نے سینئر وائس چیئرمین ناصر حمید خان اور وائس چیئرمین جاوید اقبال صدیقی کے ساتھ مشترکہ بیان میں حکومت کی طرف سے کورونا وائرس سے درپیش چیلنجوں سے نمٹنے کے لئے مختلف مالیاتی پیکجوں کے اعلان پرتبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ حقیقت میں اس پیکج پر عملدرآمد کسی بھی سرکاری ادارے یا محکمہ میں نظر نہیں آ رہا۔متعلقہ سرکاری اداروں اور بینکوں کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ انہیں حکومت کی طرف سے دی گئی مراعات یا چھوٹ کے سلسلے میں کوئی ہدایت نہیں ہے جو انتہائی بدقسمتی کی بات ہے۔چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر نے حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریٹیل سیکٹر کی بحالی کے لئے فوری طور پر حکومتی گارنٹی کے ساتھ بلاسود سرمایہ فراہم کیا جائے تاکہ ریٹیلرز دوبارہ سے اپنا کاروبار شروع کرنے کیساتھ ملک کو بیروزگاری کے طوفان سے بچانے میں بھرپور کردار ادا کریں۔

مزید خبر یں

اسلام آباد (نیوزڈیسک)اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے دنیا کی 20 بڑی معیشتوں کے حامل ممالک کے گروپ (جی 20) سے قرضوں کو مؤخر کرانے کا معاہدہ کرنے کی منظوری دے دی ہے۔اسلام آباد میں وزیراعظم کے مشیر خزانہ حفیظ شیخ کی زیر صدارت اقتصادی ... تفصیل

نیویارک (نیوزڈیسک)عالمی بینک نے متنبہ  کیا ہے کہ عالمگیر وبا کورونا سے دنیا بھر میں 6 کروڑ افراد انتہائی غربت کا شکار ہوسکتے ہیں۔برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق عالمی بینک کے صدر ڈیوڈ میلپاس نے کہا کہ پوری دنیا کو اس وقت عالمگیر وبا ... تفصیل

اسلام آباد (نیوزڈیسک)وزیر اعظم عمران خان نے 'تاریخی مالی جدت' کو سراہا جس کے تحت حکومت نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج (پی ایس ایکس) میں مسابقتی عمل (کمپیٹیٹو بک بلڈنگ) کے ذریعے سکوک کے اجرا سے 200 ارب روپے اکٹھے کیے۔ٹوئٹر پر بیان جاری کرتے ہوئے وزیر ... تفصیل