نوید کامران بلوچ نئے سیکرٹری خزانہ تعینات              وفاق نے کراچی کے تین بڑے ہسپتالوں کا کنٹرول سنبھال لیا              بھارتی انتخابات میں مودی کی جماعت بی جے پی نے کامیابی حاصل کرلی              محکمہ موسمیات نے شہرقائد میں ہیٹ ویوالرٹ جاری کردیا              وفاقی سیکرٹری خزانہ یونس ڈھاگہ کو عہدے سے ہٹا دیا گیا              پاکستان کا زمین سے زمین پر مار کرنے والے بیلسٹک میزائل ’شاہین 2‘ کا کامیاب تجربہ              وزیراعظم عمران خان کا نئی پیٹرولیم پالیسی تشکیل دینے کا اعلان              پاکستان مخالف تقاریر کا الزام: سماجی رضا کار گلا لئی اسماعیل کے خلاف مقدمہ       
تازہ تر ین

رتوڈیرو میں ایچ آئی وی متاثرہ افراد کی تعداد میں خطرناک حد تک اضافہ ہوگیا

aids

لاڑکانہ(نیوز ڈیسک) رتوڈیرو میں ایچ آئی وی متاثرہ افراد کی تعداد میں خطرناک حد تک اضافہ ہو چکا ہے، تحصیل اسپتال رتودیرو میں قائم جنرل اسکریننگ کیمپ میں کل 17ویں روز مزید 1192 افراد کی بلڈ اسریننگ کے بعد 29 نئے کیسسز سامنے آ گئے جس میں 23 معصوم بچے اور 6 بالغان شامل ہیں جس کے بعد ایچ آئی وی متاثرین کی مجموعی تعداد 507 ہو گئی ہے، جس میں 410 معصوم بچے شامل ہیں، ایک جانب تحصیل اسپتال رتودیرو میں قائم جنرل اسکریننگ کیمپ میں خواتین بچوں کی غیر معمولی رش کے باعث قائم 5 کاونٹر اور عملہ بھی کم پڑ گئے ہیں اور گیٹس بند کر کے خواتین کو مرحلہ وار قطار بنوا کر اندر چھوڑا جاتا ہے جس سے شدید گرمی میں بیمار بچوں کے ہمراہ موجود مائیں سخت اذیت سے دوچار ہیں، تو دوسری جانب لاڑکانہ چانڈکا چلڈرن اسپتال میں بچوں کا افتتاح کردہ ٹریٹمنٹ سینٹر ساتویں روز بھی فعال نہیں ہو سکا ہے، جس کے باعث ایچ آئی وی بالغان سینٹر پر آغا خان کی ماہر معالجین ڈاکٹر فاطمہ۔میر رش بڑھنے اور مقامی عملے کے تعاون نا کرنے پر سخت برہم دکھائی دیں جنہوں نے سینٹر پر موجود خواتین پر چیخ و پکار کی اور پریشان حال ماوں پر سختی برتی جس سے خواتین کی تذلیل بھی ہوئی۔ علاوہ ازیں سندھ ایڈز کنٹرول پروگرام کی جانب سے نیشنل ایڈز کنٹرول پروگرام اور ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے تعاون سے 17 روز میں مجموعی طور پر 13768 افراد کی بلڈ اسکریننگ مکمل کی گئی تاہم رمضان کے باعث یہ عمل سپہر ڈیڈھ بجے تک جاری رکھا گیا، دوسری جانب ڈی جی ہیلتھ کی جانب سے اتائی ڈینٹل کلینکس کے خلاف ڈائریکٹر اورل ہیلتھ ڈاکٹر مشتاق احمد کی سربراہی میں کارروائی کے لئے تشکیل کردہ تین رکنی ٹیم نے لاڑکانہ، باڈہ اور ڈوکری میں مخلتف ڈینٹل کلینکس کا دورہ کیا دورے سے قبل کئی ڈاکٹر کلینکس بند کر کے بھاگ گئے، جنہیں پولیس کی مدد سے تالے توڑ کر جائزہ لینے کے بعد مکمل سیل کیا گیا اور کئی ڈاکٹرز کو وارننگ بھی جاری کی گئیں۔

مزید خبر یں

پشاور (نیوزڈ یسک) ڈیرہ اسماعیل خان سے تعلق رکھنے والی 12سالہ بچی اور شمالی وزیرستان سے 17ماہ کی بچی میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوگئی ۔محکمہ صحت خیبر پختونخوا نے بتا یا کہ ڈیرہ اسماعیل خان سے تعلق رکھنے والی 12 سالہ بچی اور شمالی وزیرستان ... تفصیل

کراچی(نیوز ڈیسک)ایک سروے رپورٹ کے مطابق سمندر میں موجود پلاسٹک کے کچرے کے سبب آکسیجن بنانے والے بیکٹیریا کی نشوونما متاثرہورہی ہے جو فضا میں 10 فی صدآکسیجن بنانے میں اہم کردار اداکرتے ہیں ۔سائنس دانوں کا خیال ہے کہ یہ بیکٹیریا پلاسٹک میں پائے جانے ... تفصیل

کراچی (نیوز ڈیسک) قومی ادارہ برائے امراض قلب (این آئی سی وی ڈی) میں ادویات، آلات اور سرجیکل آلات کی شدید کمی پر ہسپتال کے ڈاکٹروں نے ادویات سمیت بنیادی ضروریات کی قلت پر انتظامیہ کو تین تین بار خط لکھ ڈالے تاہم ہسپتال انتظامیہ سب ... تفصیل