زینب الرٹ بل کا دائرہ پورے ملک تک بڑھانے کا فیصلہ
مسلم لیگ(ن ) کا مارچ میں حکومت کیخلاف تحریک چلانے کا اعلان
احساس اثاثہ جات پروگرام :حکومت کا مستحقین کو مویشی، رکشے اور ٹھیلے مفت فراہم کرنے کا فیصلہ
ترک صدرطیب اردوان کا کشمیر سے متعلق بیان، بھارت نے ترک سفیر کو طلب کرلیا
کیپٹن (ر) صفدر کی ضمانت منسوخی کیلیے پنجاب حکومت کی درخواست مسترد
حمزہ شہباز نے اثاثوں میں اضافے کا ثبوت نہیں دیا: درخواست ضمانت مسترد ہونے کا تفصیلی فیصلہ
کراچی: کیماڑی میں زہریلی گیس کے اخراج سے ہلاکتوں کی تعداد 9 ہوگئی
تازہ تر ین

پاکستان میں ہر سال 40 ہزار خواتین چھاتی کے سرطان کی وجہ سے جان سے ہاتھ دھوبیٹھتی ہیں،ماہرین

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان میں ہر سال 40 ہزار خواتین چھاتی کے سرطان کی وجہ سے جان سے ہاتھ دھوبیٹھتی ہیں جبکہ ایک کروڑ 2 لاکھ سے زائد خواتین میں چھاتی کا سرطان پھیلنے کا خدشہ رہتا ہے۔ چھاتی کے سرطان سے متعلق آگہی پھیلانے کےلئے پاکستانی ٹیلی کام کمپنی یوفون نے پنک ربن پاکستان کے اشتراک سے اسلام آباد میں اپنے ہیڈ کوارٹرز پر اپنے اسٹاف کے لئے خصوصی سیشن کا انعقاد کیا۔ اس سیشن میں چھاتی کے سرطان سے منسلک مسائل کی نشاندہی کی گئی۔ پروگرام میں چھاتی کے سرطان کی وقت سے پہلے خود تشخیص کرنے کے طریقے کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی گئی۔ قابل علاج مرض ہونے کے باوجود چھاتی کے سرطان کے ساتھ بہت سی غلط فہمیاں منسلک ہیں جن کی وجہ سے اسکی کافی دیر سے تشخیص ہوتی ہے۔ پروگرام میں ماہرین نے انکشاف کیا کہ اس بیماری کی بروقت شناخت سے زندگی بچنے کی شرح بڑھ کر 90 فیصد تک ہوجاتی ہے۔ اس سیشن کے بعد مریضوں اور اس مرض سے صحت یاب خواتین سے اظہار یکجہتی کیلئے یوفون ٹاور کو پنک لائٹس سے روشن کیا گیا۔ یہ یوفون کی جانب سے دیرینہ روایت ہے کہ وہ اس طرح کے اقدامات کے لئے تعاون کرتا ہے اور سماجی طور پر ذمہ دار ادارے کے طور پر ان مسائل کو اجاگر کرتا ہے جن کا ہر پاکستانی کو براہ راست سامنا ہوتا ہے۔ عوام میں اس بیماری سے متعلق آگہی پھیلانے کے بارے میں پنک ربن پاکستان کے سی ای او عمر آفتاب نے کہا، “ہم ہر سال ہزاروں قیمتی جانیں لاعلمی، تاخیر سے تشخیص اور چھاتی کے کینسر سے متعلق غلط تصورات کی وجہ سے ضائع کردیتے ہیں۔ اس لئے آگہی ہی واحد بچاﺅ کا راستہ ہے۔” اکتوبر کو چھاتی کے کینسر سے آگہی کا مہینہ قرار دے کر اسے بین الاقوامی سطح پر پنکٹوبر کے نام سے منایا جاتا ہے۔ اس ماہ کے دوران پنک ربن نہ صرف معلوماتی مواد کے ذریعے خواتین اور طالبات میں آگہی پھیلاتا ہے بلکہ وہ مقامی سطح پر مختلف تقاریب میں براہ راست رابطے کے ذریعے خواتین اور لڑکیوں کو آگہی فراہم کرتا ہے۔ مختلف سطحوں پر آگہی سیشنز کے انعقاد کے ذریعے چھاتی کے کینسر سے متعلق غلط تصورات کو ختم کیا جاسکتا ہے جس کے نتیجے میں لوگ اس مرض سے زیادہ موثر انداز سے نبرد آزما ہوسکتے ہیں ۔

مزید خبر یں

پشاور (نیوزڈیسک) خیبرپختونخوا اور بلوچستان میں پولیو کے 5 نئے کیسز کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد رواں برس کے ابتدائی ڈیڑھ ماہ میں ملک کے مختلف حصوں میں سامنے آنے والے پولیو کیسز کی تعداد 17 ہوگئی۔ایمرجنسی آپریشن سینٹر خیبر پختونخوا کے مطابق صوبے ... تفصیل

بیجنگ (نیوزڈیسک) چینی حکام نے کہا ہے کہ چین میں پھیلنے والے کرونا وائرس سے مزید درجنوں افراد جاں بحق ہو گئے جس کے بعد اس وائرس سے ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد ڈیڑھ ہزار سے تجاوز کرگئی ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق چینی حکام ... تفصیل

بیجنگ (نیوزڈیسک) چین میں گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کرونا وائرس سےمتاثرہ 103 افراد کی ہلاکت کے بعد مجموعی طورپر اس وائرس سے ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد 1016 تک جا پہنچی ہے۔ دوسری طرف چینی حکام نے کہاہے کہ کرونا وائرس سے متاثرہ مزید ... تفصیل