شاہد خاقان عباسی اور احسن اقبال اڈیالہ جیل سے رہا
جعلی اکاؤنٹس کیس: عبدالغنی مجید کی تمام ریفرنسز میں ضمانت منظور
کورونا وائرس: اندرون ملک سے ایران جانیوالے زائرین کا بلوچستان میں داخلہ بند
معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے پاکستان میں کورونا وائرس کے 2 کیسز کی تصدیق کر دی
پاکستان کا افغان مفاہمتی عمل کے لیے قومی ڈائیلاگ کروانے کا فیصلہ
اثاثہ جات کیس: نیب کا رانا ثناءاللہ کی اہلیہ، داماد اور بیٹی سے بھی تحقیقات کا فیصلہ
کرونا وائرس : پاک ایران سرحد کے بعد کوئٹہ تفتان ٹرین سروس بھی بند
بھارت : نئی دہلی میں مسلم کش فسادات میں جاں بحق افراد کی تعداد 20 ہوگئی ؛ وزیراعلیٰ کی فوج طلب کرنے کی درخواست
نیب کا احسن اقبال، شاہد خاقان کی ضمانت سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا فیصلہ
پی ٹی ایم سربراہ منظور پشتین جیل سے رہا
پنجاب کابینہ نے نواز شریف کی ضمانت میں توسیع کی درخواست مسترد کر دی
تازہ تر ین

موسم بہار میں پیدائش امراض قلب کا خطرہ بڑھاتی ہے، تحقیق

واشنگٹن(نیوزڈیسک)موسم بہار میں پیدا ہونے والے بچوں میں بعد کی زندگی میں امراض قلب کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک تحقیق میں سامنے آیا۔ہارورڈ یونیورسٹی کی اس تحقیق میں ایک لاکھ 16 ہزار سے زائد افراد کی تاریخ پیدائش اور دل کی شریانوں سے جڑے امراض کے درمیان تعلق کا موازنہ کیا گیا۔تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ اپریل میں پیدا ہونے والے افراد میں اگلے 38 سال میں نومبر میں پیدا ہونے والے لوگوں کے مقابلے میں امراض قلب سے موت کا خطرہ 12 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔اگرچہ یہ تو واضح نہیں کہ ایسا کیوں ہوتا ہے مگر سائنسدانوں کے خیال میں موسم کے مطابق غذا، ہوائی آلودگی اور سورج کی روشنی میں تبدیلی وغیرہ حمل اور زندگی کی ابتدا میں کردار ادا کرنے والے عوامل ہیں۔ماضی کی تحقیقی رپورٹس میں پہلے یہ دعویٰ سامےن آیا تھا کہ نومبر میں پیدا ہونے والے افراد میں امراض قلب کا خطرہ سب سے کم ہوتا ہے جبکہ مئی میں پیدا ہونے والوں میں سب سے زیادہ۔اس نئی تحقیق میں شامل سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ ماضی کی تحقیقی رپورٹس میں نتائج پر اثرانداز ہونے والے دیگر عناصر کو شامل نہیں کیا گیا تھا۔جریدے بی ایم جے میں شائع تحقیق بتایا گیا کہ امیر گھرانوں میں پیدا ہونے والے افراد میں امراض قلب اور جلد موت کاخطرہ کم ہوتا ہے۔محققین نے اس حوالے سے مزید جاننے کے لیے 1976 میں نرسوں پر ہونے والی ایک تحقیق کے نتائج کا جائزہ لیا جو 38 سال تک جاری رہی تھی۔نتائج سے عندیہ ملا کہ جن خواتین کی پیدائش اپریل میں ہوئی، ان میں امراض قلب سے موت کا خطرہ ہوتا ہے۔مارچ میں پیدا ہونے والی خواتین میں یہ خطرہ 9 فیصد، مئی یا جولائی میں 8 فیصد جبکہ جون میں 7 فیصد ہوتا ہے۔دسمبر میں یہ شرح 5 فیصد ہوتی ہے۔سائنسدانوں نے آخر میں واضح کیا کہ اس کی وجہ فی الحال واضح نہیں اور ان کو لگتا ہے کہ ممکنہ طور پر پھلوں اور سبزیوں کی دستیابی کا اس سے کوئی تعلق ہوسکتا ہے۔محققین نے اس حوالے سے مزید تحقیق کی ضرورت پر زور دیا کہ تاکہ نتائج کی تصدیق کی جاسکے اور اس کے ممکنہ میکنزم کو بھی سامنے لایا جاسکے۔

مزید خبر یں

واشنگٹن(نیوزڈیسک) چین نے رواں ماہ کے شروع میں نوول کورونا وائرس کووڈ 19 کے شکار افراد میں تجرباتی دوا ریمیڈیسیور کی آزمائش شروع کی تھی جس کے نتائج تو فی الحال سامنے نہیں آئے مگر اب امریکا نے بھی اس کے ٹرائل کا فیصلہ کرلیا ہے۔میڈیارپورٹس ... تفصیل

جنیوا(نیوزڈیسک ) بدترین فضائی آلودگی والے 30 شہروں میں بھارت کے 21 شہرشامل ہیں،غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ہر سال فضائی آلودگی کے حوالے سے رپورٹ جاری کرنے والے سوئٹزرلینڈ و امریکی ادارے آئی کیو ایئر کی تازہ رپورٹ کے مطابق بدترین فضائی آلودگی والے دنیا ... تفصیل

کراچی(نیوزڈیسک) معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے پاکستان میں کورونا وائرس کے 2 کیسز کی تصدیق کر دی ۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں 22 سالہ نوجوان میں کورونا وائرس کی تشخیص کے بعد وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا نے دوسرے کیس کی بھی ... تفصیل