وزیراعظم کا 27 مارچ سے غربت کے خاتمے سے متعلق جامع پروگرام شروع کرنے کا اعلان              سونے کی قیمت ملکی بلند ترین سطح پر ،مقامی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ 70ہزار 500روپے              آصف زرداری کی بریت کے خلاف نیب کی درخواست سماعت کے لئے مقرر              ڈاکٹر سعید کے بیرون ملک جانے پر پابندی ختم              اسد منیر مبینہ خودکشی ،چیئر مین نیب کا انکوائر ی خود کر نے کا فیصلہ              چین سے 2ارب ڈالر پاکستان کو موصول ہو گئے              نقیب اﷲقتل کیس میں راﺅ انوار سمیت دیگر ملزمان پر فرد جر م عائد              نوازشریف کی میڈیکل رپورٹ نارمل، پنجاب حکومت کو بھجوادی              کرائسٹ چرچ واقعہ: جیسنڈا آرڈرن کا حملے کی تحقیقات کے لیے رائل کمیشن بنانے کا اعلان       
تازہ تر ین

چنانچہ امیر نے آڈر دیا کہ اس کی گردن اڑا دو۔ تو اسکی گردن اڑادی

ظلم کا بدلہ

            ایک کُردی شخص ایک امیرکے ساتھ ایک دستر خواں پر بیٹھا تو دسترخواں پر بھنے ہوئے دو چکوربھی رکھے ہوئے تھے۔ کُردی نے ایک چکور اٹھایا اور ہنسنے لگا۔ امیر نے اس سے ہنسنے کی وجہ پوچھی۔ تو اس نے کہا:

میں نے ایک مرتبہ ایک تاجر کو لوٹا اور میں نے جب اس کو قتل کرنا چاہا تو وہ مجھ سے روکرعرض کرنے لگا لیکن میں نے اس کو قبول نہ کیا ۔ جب اس نے میرا پکاارادہ دیکھا کہ یہ مجھے قتل کردے گا۔ اس نے پہاڑ پر دو چکور دیکھے تو ان چکوروں سےکہا کہ تم میرے گواہ بن جاؤ۔ کہ یہ مجھے ظلماً قتل کررہا ہے ۔ پھر میں نے اس کوقتل کر دیا۔ تو اب میں نے ان چکوروں کو دسترخواں پر دیکھا تو اس تاجرکی بے وقوفی یاد آگئی کہ اس نے ان پرندوں کو گواہ بنایا تھا اس لئے ہنسا ہوں۔

            جب امیر نے بات سنی تو اس نے کہا: اللہ کی قسم : ان پرندوں نے تیرے خلاف ایک شخص کے پاس گوہی دی ہے جو بندہ قصاص لیتا ہے۔ چنانچہ امیر نے آڈر دیا کہ اس کی گردن اڑا دو۔ تو اسکی گردن اڑادی۔

لاحول ولا قوۃ الا باللہ

(علامہ شہاب الدین قلیوبیؒ)