محکمہ داخلہ نے مریم نواز ،ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کو نواز شریف سے ملاقات کی اجازت دیدی              یوم پاکستان پریڈ ،چار گھنٹے کیلئے اسلام آباد کی فضائی حدود بند کرنے کا فیصلہ              ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کو قدرتی آفات سے بچاوکیلئے 15 کروڑ روپے کی گرانٹ فراہم کردی              بلاول بھٹو کوغداروطن قراردینے کے مطالبے کی قرارداد جمع              مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی فائرنگ سے بچے سمیت 7 کشمیری شہید              مريم نواز کی کل جيل کے باہر دھرنا دينے کی دھمکی              کر اچی:مفتی تقی عثمانی کے قافلے پر فائرنگ ،2افراد جاں بحق              پاکستان پیپلز پارٹی کا نیشنل ایکشن پلان پر حکومتی بریفنگ کے بائیکاٹ کا فیصلہ              اٹک میں گھر کی چھت گرنے سے 6افراد جا ں بحق       
تازہ تر ین

علم والے ہی قوم کے امیر ہیں

علم والے ہی قوم کے امیر ہیں

            حضرت زہری ؓ فرماتے ہیں کہ میں عبدالملک بن مروان کے پاس گیا تو اس نے مجھے کہا تم کہاں سے آئے ہو؟  میں نے کہا میں مکہ مکرمہ  سے آیا ہوں  ۔ پھر اس نے کہا تیرے پیچھے ان کا امیر کون ہے؟ میں کہا عطا ء بن ابی رباح ۔ ابن مروان  نےکہا: وہ عرب سے ہے یا غلاموں میں سے؟ میں نے کہا کہ وہ  غلاموں میں سے ہے۔ ابن مروان نے کہا: پھر وہ کیسے ان کی سرداری کرے گا۔ میں نے کہا وہ امانت اور دیانت داری سے سرداری کرے گا۔

                پھر کہنے لگایمن والوں کا امیر کون ہوگا۔ فرمایا طوؤس بن کیسان ۔ ابن مروان نے پوچھا مصروالوں کا امیر کون ہوگا؟ فرمایا: یزید بن ابی حبیب ۔ پھر پوچھا شام والوں کا امیر کون ہوگا؟ فرمایا مکحول دمشقی ۔ پھر پوچھا اہل جزیرہ کا امیر کون ہوگا؟ فرمایا: میمون بن مہران  ۔ پھر پوچھا: اہل خراسان کا امیر کون ہوگا؟ میں نے کہا ضحاک بن مزاحم ۔ پھر پوچھنے لگا کوفہ والوں کا امیر کون ہوگا؟ فرمایا حضرت ابرہیم بن نخعی ۔ پھر عبدالملک بن مروان کہنے لگا۔

              اے زہریؓ تو ہلاک ہوجائے۔ تو نے مجھ سے پریشانی دور کردی۔ اللہ کی قسم : موالی عرب کے امیر ہوں گے۔ حتیٰ کہ موالی ہی منبروں پر خطبہ دیں گے۔ اور عرب لوگ نیچے بیٹھیں گے۔ میں نے کہا اے امیر المومنین  بے شک یہ اللہ تعالیٰ کا امر اور اسکا معاملہ ہے۔ جو اس کے دین کی خدمت کرے گا۔ وہی ان کا قائد ہوگا اور جس نے اس کے دین کی خدمت چھوڑدی وہ ناکام ہو گا۔ اور بے شک اللہ تعالیٰ حکمت والا باخبرہے۔ واللہ اعلم

(علامہ شہاب الدین قلیوبیؒ)