کھیل کے میدان سے افسوسناک خبر اہم ترین عہدیدار نے تنگ آکر استعفیٰ دیدیا              قطر جانے کے خواہشمند افراد کیلئے بڑی خوشخبری آگئی پاکستانی پروفیشنلز اور ہنرمند افراد متوجہ ہوں، پھر نہ کہنا خبر نہ ہوئی              یو اے ای میں رہائش پذیر پاکستانیوں کیلئے دھماکے دار خبر آگئی ، عام تعطیل کا اعلان کردیاگیا              سیاحوں کی بس میں دھماکہ ، ہلاکتیں ، متعدد زخمی ، افسوسناک واقعہ کہاں پیش آیا ؟ جانئے              پارسل بھیجنا ہو تو دورنہ جائیں، اب ڈاکخانے کا عملہ ہی گھر بلا لیں ایسی سہولت متعارف جان کرآپ بھی دانتوں تلے انگلیاں دبا لینگے              باکمال لوگ ، لاجواب سروس کے شاندار اقدام نے شہریوں کے دل جیت لیئے ،جان کر آپ بھی داد دیئے بغیر نہ رہ سکیں گے              اہم ترین ساہم ترین سیاسی رہنما رشتہ ازدوج میں منسلک ہوگئے، لڑکی کون؟ کس بڑی شخصیت کی بیٹی ہیں ؟ جانئےیاسی رہنما رشتہ ازدوج میں منسلک ہوگئے، لڑکی کون؟ کس بڑی شخصیت کی بیٹی ہیں ؟ جانئے              خوفناک حادثے نے سب کو رُلادیا ، ایک ہی خاندان کے 4 افراد جاں بحق ،ہر طرف چیخ وپکار       
تازہ تر ین

اور اس کتاب کا نام الف لیلہ رکھ دیا اور یہ سب من گھڑت جھوٹ تھا کئی لوگوں کا خیال ہے کہ فارس میں بے مقصد داستان گوئی کا بنیاد یہی ہے

قصہ الف لیلہ

            ایران کا ایک بادشاہ جب بھی کسی عورت سےنکاح کرتا تو ایک رات گزار کر اگلے دن اسے قتل کر دیتا ایک باراس نے ایک بادشاہ کی بیٹی سے شادی کی جو عقل و دانش والی تھی۔جب رات کو وہ اس کے کمرے میں آیا تو اس نے ایک بے مقصد طویل کہانی سنانی شروع کر دی اور اتنی طویل کر دی کہ رات گزر گئی لیکن کہانی کا کچھ حصہ باقی رہ گیا بادشاہ کو کہانی مکمل سننے کا شوق ہوا ( وہ قتل سے بچ گئی) جب اگلی رات آئی بادشاہ نے کہانی کا بقیہ حصہ سننے کا شوق ظاہر کیا اورکہا کہ سناؤ چنانچہ  اس نے کہانی سنانی شروع کی مگر آج رات بھی کہانی پوری نہ ہوسکی حتیٰ کہ ہزار رات وہ اکھٹے رہے یہاں تک وہ لڑکے سے حاملہ ہو گئی تو اس نے بادشاہ کو اس کی اطلاح کردی۔اور اب اس نے بتایا کہ کہانی والا بہانہ میں نے اس لیے بنایا تھا۔ بادشاہ نے اسے بڑی دانا و ذہین شمار کیا اور اس میں رغبت کا اظہار کیا اور اسے باقی رکھا (اور قتل نہ کیا) پس سارے واقع کو کسی نے جمع کرکے کتاب بنا دی اور اس کتاب کا نام الف لیلہ رکھ دیا اور یہ سب من گھڑت جھوٹ تھا کئی لوگوں کا خیال ہے کہ فارس میں بے مقصد داستان گوئی کا بنیاد یہی ہے۔

(علامہ شہاب الدین قلیوبیؒ)