سپریم کورٹ نے بحریہ ٹاﺅن کر اچی کی 460ارب روپے کی پیشکش قبول کر لی              وزیر اعظم نیوز ی لینڈ کا خود کار و نیم خودکارہتھیاروں پر پابندی کا اعلان              جماعت اسلامی کا متحدہ مجلس عمل سے علیحدگی کا باضابطہ اعلان              مشال قتل کیس میں مزیددو ملزمان کو عمر قید       
تازہ تر ین

طالبان سے بات چیت سست مگرمستحکم اقدامات عمل میں لائے جارہے ہیں،زلمے خلیل زاد

دوحہ /واشنگٹن(نیوز ڈیسک) امریکا کی جانب سے افغان امن مرحلے کے نمائندے زلمے خلیل زاد نے کہاہے کہ سست لیکن مستحکم اقدامات عمل میں لائے جارہے ہیں۔ادھرقطر میں طالبان ذرائع نے بتایاہے کہ معاہدے کا ابتدائی ڈرافٹ تیار ہے اور مذاکرات کے رواں مرحلے میں اسے حتمی شکل دیا جائے گا۔ انخلا کے وقت پر اب تک کوئی معاہدہ نہیں ہوا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ایک بیان میں ان کا کہنا تھا کہ ہم امن کے لیے سست اور مستحکم اقدامات کر رہے ہیں۔مذاکرات میں امریکی ٹیم کی سربراہی کرنے والے خلیل زاد کا کہنا تھا کہ دونوں اطراف سے 4 اہم امور پر غور کیا جارہا ہے جن میں امریکی فوج کا افغانستان سے انخلا، طالبان کی القاعدہ اور داعش کی جنگ میں معاونت، جنگ بندی اور حکومت سمیت تمام افغان اداروں کی مذاکرات میں شمولیت شامل ہے۔خلیل زاد کا کہنا تھا کہ دوحہ میں مذاکرات کے بحال ہونے کے ساتھ ساتھ افغانستان کی اندرونی سطح پر طالبان سے بحث اور مذاکرات کے لیے کابل میں ٹیم تشکیل دی جارہی ہے۔ادھرقطر میں طالبان ذرائع نے برطانوی نشریاتی ادارے کو بتایا کہ معاہدے کا ابتدائی ڈرافٹ تیار ہے اور مذاکرات کے اس مرحلے میں اسے حتمی شکل دیا جائے گا۔ذرائع کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کے نمائندوں اور نوروے کی حکومت مذاکرات میں تکنیکی معاونت فراہم کر رہی ہے۔دوحہ میں مذاکرات کار 5 سالوں میں تمام امریکی فوجیوں کے انخلا پر ایک منصوبہ تشکیل دینے کا کام کر رہے ہیں۔پینٹاگون کی جانب سے تیار کیے گئے اس منصوبے کے تحت تمام غیر ملکی فوجیوں کو افغانستان سے 5 سالوں میں نکلنا ہوگا۔تاہم طالبان حکام نے صحافیوں کو بتایا کہ انخلا کے وقت پر اب تک کوئی معاہدہ نہیں ہوا ہے۔یہ اب بھی واضح نہیں کہ طالبان افغان حکومت کے عہدیداروں سے مذاکرات کے لیے تیار ہیں یا نہیں۔کابل کی مسلسل درخواستوں کے باوجود طالبان نے افغان حکومت سے مذاکرات کرنے سے انکار کردیا ہے جبکہ امریکا نے بھی اسرار کیا ہے کہ افغانستان پر حتمی معاہدے میں حکومت کو بھی شامل ہونا چاہیے۔امریکا نے یہ بھی کہا کہ امن مرحلے کی کامیابی کے لیے مکمل جنگ بندی ناگزیر ہے۔

مزید خبر یں

صنعاء(نیوز ڈیسک)یمن کے نائب صدر علی محسن الاحمر نے کہا ہے کہ آئینی حکومت نے سویڈن میں طے پائے جنگ بندی معاہدے کے نفاذ کے لیے غیرمعمولی لچک کا مظاہرہ کرتے ہوئے پسپائی اختیار کی مگر حوثی ملیشیا اپنی ہٹ دھرمی پر بدستور قائم ہے۔میڈیارپورٹس کے ... تفصیل

کابل(نیوز ڈیسک) اقوام متحدہ کے ہنگامی امداد کے ادارے نے کہاہے کہ افغانستان میں شدید بارشوں کے نتیجے والے آنے والے سیلاب کے باعث تقریباً ایک لاکھ بائیس ہزار شہری متاثر ہوئے ۔ سیلاب کی وجہ سے کم از کم تریسٹھ افراد ہلاک اور بتیس زخمی ... تفصیل

واشنگٹن(نیوز ڈیسک)امریکی صدر ٹرمپ نے کہا ہے کہ چین کے ساتھ تجارتی تنازعے میں ایک ممکنہ سمجھوتہ آہستہ آہستہ قریب آتا جا رہا ہے۔ امریکا میں چینی درآمدات پر اضافی محصولات عائد کیے جانے کے خطرے کی وجہ سے چین،امریکاکے ساتھ جلد ہی کسی نہ کسی ... تفصیل