وزیراعظم عمران خان نے سندھ سے 2 ہندو لڑکیوں کے اغوا کا نوٹس لے لیا              برطانیہ ، پاکستانی ہائی کمیشن نے برطانوی شہریوں کیلئے ای ویزا کا اجراءشروع کر دیا              حکومت سندھ نے ایک بارپھرسرکاری ملازمتوں پرپابندی عائد کردی              مفتی تقی عثمانی حملہ: 6 افراد کے خلاف دہشت گردی کا مقدمہ درج              پشاور بس منصوبے کا افتتاح غیر معینہ مدت تک ملتوی              سابق وزیر اعظم شوکت عزیز کے وارنٹ گرفتار ی جاری              صدر ٹرمپ اور اتحادی افواج کا شام سے داعش کے مکمل خاتمے کا اعلان              ڈیم فنڈ: کینیڈا میں عمران خان کے دستخط شدہ 2 بلے 65 ہزار ڈالرز میں نیلام              یوم پاکستان ،مسلح افواج کی شاندار پریڈ ،ٹینکوں اور میزائلوں کی نمائش ،جے ایف 17 تھنڈر طیاروں کا شاندار کرتب دکھا کر پیشہ وارانہ صلاحیتوں کا مظاہرہ              بھارت نے یسین ملک کی جماعت جموں کشمیر لبریشن فرنٹ پر پابندی لگادی       
تازہ تر ین

شہر قائد میں زوردار بم دھماکہ ، ہلاکتوں کا خدشہ ،افراتفری مچ گئی ، ہر طرف چیخ وپکار

اسلام آباد(نیو زڈیسک) ڈیفنس کے علاقے خیابان مجاہد میں خالی پلاٹ میں کھڑی ایک گاڑی کو دیسی ساختہ وی بی آئی ای ڈی کے ذریعے اڑا دیا گیا، جس کے نتیجے میں کار ٹکڑے ٹکڑے ہوگئی، تاہم واقعے میں کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا۔ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) ساؤتھ جاوید علام اوڈھو کے مطابق گاڑی گزشتہ روز شام 6 بجے کے قریب جمشید کوارٹر سے چوری ہوئی تھی، جس میں سے گھر میں استعمال ہونے والے 6 گیس سلینڈرز برآمد ہوئے، تاہم گاڑی کا سی این جی سلینڈر محفوظ رہا۔ڈی آئی جی ساؤتھ کے مطابق دھماکا خیز مواد کو دیگر سلینڈرز میں بھری گیس سےجوڑا گیا تھا۔واضح رہے کہ اس سے قبل پولیس نے موقف اختیار کیا تھا کہ گاڑی میں دھماکا گیس سلینڈر پھٹنے سے ہوا، تاہم بم ڈسپوزل اسکواڈ نے سلینڈر دھماکے کا امکان مسترد کردیا تھا۔تباہ ہونے والی گاڑی سے گھر میں استعمال ہونے والے 6 گیس سلینڈرز برآمد ہوئے—۔گریبمزید تحقیقات کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ دھماکا دیسی ساختہ دیسی ساختہ وی بی آئی ای ڈی کے ذریعے کیا گیا۔ڈی آئی جی ساؤتھ جاوید عالم اوڈھو کے مطابق دھماکے میں 8 سے 10 کلو گرام بارودی مواد اور 6 میٹر لمبی ڈیٹونیٹنگ کورڈ استعمال کی گئی تھی، تاہم خوش قسمتی سے پورا بم نہیں پھٹ سکا۔انہوں نے مزید بتایا کہ جس مقام پر دھماکا کیا گیا وہاں کوئی ہائی ویلیو ٹارگٹ نہیں، دھماکے کا مقصد خوف و ہراس پھیلانا تھا۔دھماکے میں 8 سے 10 کلو گرام بارودی مواد اور 6 میٹر لمبی ڈیٹونیٹنگ کورڈ استعمال کی گئی تھی—ڈی آئی جی ساؤتھ کے مطابق بارود کے ساتھ اگر گیس سلینڈرز بھی پھٹ جاتے تو 100 کلوگرام شدت کا دھماکا ہوتا۔تفتیشی ذرائع کے مطابق یہ گاڑی ثنا اللہ نامی شہری کے نام پر ہے، جس کی چوری کی شکایت حنا نامی خاتون نے درج کروائی تھی۔واضح رہے کہ یہ گاڑی اس سے قبل 2007 میں بھی بوٹ بیسن سے چوری ہوئی تھی اور پانچ روز بعد میٹروول ولیکا اسپتال کے پاس سے ملی تھی۔

مزید خبر یں

ملتان(نیوز ڈیسک)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ بھارت سفارت کاری کے ذریعے پاکستان کو تنہا کرنے کی کوشش کر رہا ہے، بھارت میں الیکشن تک اتار چڑھاو دکھائی دےگا، ہمیں مکار دشمن سے مکمل چوکنا رہنا ہے، ہم اپنا دفاع کریں گے ۔ میڈیا ... تفصیل

کراچی(نیوز ڈیسک)پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے 26 مارچ کو کراچی سے لاڑکانہ ٹرین مارچ کا اعلان کر دیا۔پیپلز پارٹی نے حکومت کے خلاف ٹرین مارچ کے شیڈول کا اعلان کر دیا۔ ٹرین مارچ کا آغاز کراچی سے 26 مارچ کی صبح کیا ... تفصیل

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہاہے کہ پاکستان نے دہشت گردی اور انتہا پسندی کو اکھاڑ پھینکا ہے ، اب ترقی کی راستے پر گامزن ہے،ہمسایہ اور دیگر دوست ممالک خطے میں امن کے منتظر ہیں،وسط ایشیائی ریاستوں نے نوروز فیسٹیول کا ... تفصیل