وزیر اعظم نیوز ی لینڈ کا خود کار و نیم خودکارہتھیاروں پر پابندی کا اعلان              جماعت اسلامی کا متحدہ مجلس عمل سے علیحدگی کا باضابطہ اعلان              مشال قتل کیس میں مزیددو ملزمان کو عمر قید       
تازہ تر ین

لڑکی اور منگیتر کا ملاقات کرنےپر،لڑکی اور منگیتر منگیر کو بے دردی سے قتل،، وجہ کیابنی ؟ جانئے

اسلام آباد(نیو زڈیسک)ایک دوسرے سے ملاقات کرنے اور ساتھ سیلفی لینے پر کراچی میں جواں سالہ لڑکی جبکہ سوات میں اس کے منگیر کو بے دردی سے قتل کردیا گیا۔پولیس کے مطابق 19 سالہ لڑکی کو اورنگی ٹاؤن کے علاقے پیر آباد میں اس کے والد نے مبینہ طور پر زہر دے کر قتل کیا جبکہ اس کے منگیتر اور کزن سلمان کو سوات میں فائرنگ کرکے قتل کیا گیا۔پیر آباد پولیس اسٹیشن سے ایس ایچ او ایاز بروہی نے انکشاف کیا کہ لڑکی کے قتل کے خلاف اس کی والدہ نے درخواست دی اور متعلقہ عدالت کی ہدایت پر قتل کا مقدمہ درج کرنے کے بعد مقتولہ کے والد اور دادا کو گرفتار کرلیا گیا۔گرفتار والد نے دعویٰ کیا کہ ان کی بیٹی نے قصبہ کالونی میں ان کے گھر میں زہریلا مواد کھا کر خودکشی کی۔ایس ایچ او ایاز بروہی کا کہنا تھا کہ مَرینہ کی موت 7 نومبر کو ہوئی، اگلے روز لڑکی کے والد اور رشتہ داروں نے یہ دعویٰ کرکے اس کی تدفین کردی کہ مرینہ نے خودکشی کی جبکہ لاش کا پوسٹ مارٹم بھی نہیں کرایا گیا۔تاہم مقتولہ کی والدہ عابدہ نے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج غربی کی عدالت میں درخواست دائر کی، جنہوں نے پولیس کو قتل کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا۔پیر آباد پولیس نے عدالتی حکم کی تعمیل کرتے ہوئے 24 نومبر کو واقعے کا مقدمہ درج کیا اور لڑکی کے والد عبدالرحیم اور دادا عبدالحکیم کو گرفتار کیا، جنہیں جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا، جبکہ تفتیشی افسران واقعے کی مزید تحقیقات کر رہے ہیں۔لڑکی کی شکایت کنندہ والدہ نے پولیس کو بتایا کہ واقعے سے چند روز قبل ان کی بہن اپنے بیٹے اور لڑکی کے منگیتر سلمان کے ہمراہ اپنے آبائی علاقے سوات سے آئی تھیں۔والدہ نے کہا کہ دونوں بچوں نے ملاقات کی اور اسمارٹ فون سے تصاویر لیں، جن پر لڑکی کے عزیزوں نے اعتراض اٹھایا۔علاقے کے ایس ایچ او ایاز بروہی کا کہنا تھا کہ لڑکی کی والدہ کے بیان کے مطابق ان کے بھانجے کو سوات میں ‘غیرت’ کے نام پر قتل کیا گیا اور بعد ازاں ان کی بیٹی کا کراچی میں قتل کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ چونکہ لڑکے کا قتل کراچی میں نہیں ہوا اس لیے وہ ان الزامات سے متعلق کچھ کہنے سے قاصر ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ پولیس لڑکی کی قبر کشائی کا انتظار کر رہی ہے تاکہ اس کی موت کی اصل وجہ سامنے آسکے، جبکہ شکایت کنندہ بھی سوات جاچکی ہیں۔کیس کے تفتیشی افسر انسپیکٹر فاروق جنجوعہ نے کہا کہ مقدمے میں دیگر تین مشتبہ افراد کو بھی نامزد کیا گیا ہے جو فرار ہوچکے ہیں۔انہوں نے انکشاف کیا کہ لڑکی کی اپنے کزن سے واقعے سے 20 سے 25 روز قبل ہی منگنی ہوئی تھی۔

مزید خبر یں

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)ترجمان چیئرمین پیپلز پارٹی مصطفی نواز کھوکھر نے کہاہے کہ عمران خان کی حکومت انتہاپسند کالعدم جماعتوں کے دفاع میں کھل کر سامنے آ چکی ہے۔ ایک بیان میں ترجمان بلاول بھٹو زرداری نے کہاکہ حکومت کالعدم جماعتوں کے خلاف بات کرنے والوں ... تفصیل

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا ٹویٹر پر لاٹھی گولی کی سرکار نہیں چلے گی کے ہیش ٹیگ کے ساتھ ٹویٹ کرتے ہوئے کہاہے کہ کالعدم جماعتوں سے وابستہ وزراءکابینہ میں اور جمہوری کارکن زیرحراست ہیں؟ ۔ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں بلاول بھٹو ... تفصیل

لاہور (نیوز ڈیسک) چیف جسٹس آف پاکستان مسٹر جسٹس آصف سعید کھوسہ نے قابل ضمانت مقدمے میں درخواست مسترد کرنے پر ماتحت عدلیہ پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ قابل ضمانت مقدمے میں عدالت ضمانت مسترد کرہی نہیں سکتی، عدالت نے لڑائی ... تفصیل