وزیراعظم کا 27 مارچ سے غربت کے خاتمے سے متعلق جامع پروگرام شروع کرنے کا اعلان              سونے کی قیمت ملکی بلند ترین سطح پر ،مقامی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ 70ہزار 500روپے              آصف زرداری کی بریت کے خلاف نیب کی درخواست سماعت کے لئے مقرر              ڈاکٹر سعید کے بیرون ملک جانے پر پابندی ختم              اسد منیر مبینہ خودکشی ،چیئر مین نیب کا انکوائر ی خود کر نے کا فیصلہ              چین سے 2ارب ڈالر پاکستان کو موصول ہو گئے              نقیب اﷲقتل کیس میں راﺅ انوار سمیت دیگر ملزمان پر فرد جر م عائد              نوازشریف کی میڈیکل رپورٹ نارمل، پنجاب حکومت کو بھجوادی              کرائسٹ چرچ واقعہ: جیسنڈا آرڈرن کا حملے کی تحقیقات کے لیے رائل کمیشن بنانے کا اعلان       
تازہ تر ین

کراچی میں 2 بچوں کی ہلاکت،رپورٹ نے کھلبلی مچادی ، اصل کہانی منظر عام پر آگئی

سلام آباد(نیو زڈیسک)کراچی کے علاقے ڈیفنس کے ایک ریسٹورنٹ کا کھانا کھانے سے گذشتہ ماہ 2 بچوں کی ہلاکت کے واقعے میں پیش رفت ہوئی ہے اور تجزیاتی رپورٹس میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ریسٹورنٹ اور پلے لینڈ میں واقع دکان کی کھانے کی اشیاء مضرِصحت تھیں، جنہیں کھانے سے بچوں کو فوڈ پوائزنگ ہوئی، ان کی حالت خراب ہوئی اور وہ دم توڑ گئے۔حکام کے مطابق لاہور اور کراچی سے میڈیکل رپورٹس پولیس کو موصول ہوگئی ہیں۔ذرائع کے مطابق پولیس نے 60 کے قریب سیمپل ٹیسٹ کے لیے بھیجے تھے۔لاہور سے موصول ہونے والی ٹاکسی کولوجی رپورٹ کے مطابق کھانے میں زہر کے شواہد نہیں ملے، تاہم کھانے کے نمونوں کے غیر معیاری ہونے کے ثبوت ملے ہیں۔کراچی میں 2 بچوں کی ہلاکت: ‘فرانزک تجزیے کے دوران نمونوں میں زہر نہیں پایا گیادوسری جانب تحقیقاتی حکام کے مطابق کراچی یونیورسٹی کے ریسرچ سینٹر کی رپورٹ بھی موصول ہوگئی ہے، جس کے مطابق بچوں کو غیر معیاری کھانا کھانے سے فوڈ پوائزنگ ہوئی، جس کے بعد انہیں الٹیاں لگیں اور ان کی حالت خراب ہوئی۔تاہم حکام کا کہنا ہے کہ مائیکروبائیولوجی کی رپورٹ ابھی آنا باقی ہے۔حکام کے مطابق رپورٹ کے بعد مستند ڈاکٹرز کا ایک پینل بناکر ان سے مشورہ کیا جائے گا، جس کے بعد ہی بچوں کی موت کی وجہ کا تعین ممکن ہوسکے گا۔واضح رہے کہ جاں بحق ہونے والے دونوں بچے ہفتہ 10 نومبر کی رات اپنی والدہ کے ہمراہ پہلے ایک پلے لینڈ گئے جہاں انہوں نے ٹافیاں، آئس کریم اور چپس کھائے اور اس کے بعد زمزمہ میں واقع ایک ریسٹورنٹ میں کھانا کھایا۔ مبینہ زہرخورانی سے بچوں کی ہلاکت: نجی اسپتال کے ڈاکٹرز پر مشتمل بورڈ بنانے کا فیصلہ پولیس کے مطابق متاثرہ خاندان نے ہفتے کی رات 11 بجے کے قریب ریسٹورنٹ سے کھانا کھایا اور صبح 5 سے 6 بجے کے درمیان دونوں بچوں اور والدہ کی طبیعت خراب ہوئی اور انہیں الٹیاں ہوئیں۔ متاثرین کو اتوار (11 نومبر) کی دوپہر ایک نجی اسپتال منتقل کیا گیا، جہاں دونوں بچے دوران علاج دم توڑ گئے جب کہ ان کی والدہ کافی دن وہاں زیرعلاج رہیں۔انتقال کر جانے والے بچوں کی شناخت ڈیڑھ سالہ احمد اور 5 سالہ محمد کے نام سے ہوئی۔بچوں کی ابتدائی میڈیکولیگل رپورٹ اس سے قبل ہی پولیس کے حوالے کردی گئی تھی جبکہ بچوں کے نمونے فرانزک ٹیسٹ کے لیے لاہور اور کراچی کے ریسرچ سینٹر کو بھجوائے گئے تھے۔

مزید خبر یں

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)وزیر اعظم عمران خان نے نئے لوکل نظام کو آئندہ ایک ماہ میں تمام ضروری مراحل مکمل کرکے نافذ العمل کرنیکی ہدایت کرتے ہوئے کہاہے کہ ماضی میں خیبر پختونخواہ میں ویلیج کونسلز کے قیام کا تجربہ بہت کامیاب رہا،اس نظام کو مزید ... تفصیل

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)وزیر مملکت برائے داخلہ شہر یار آفریدی نے نادر اپاسپورٹ اور امیگریشن ڈیپارٹمنٹس کو شمالی اور جنوبی وزیرستان میں موبائیل دفاترقائم کرنے کی ہداہت کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیرستان کی عوام کے مسائل بلاتفریق حل کیے جائیں گئے،وفاقی حکومت وزیرستان کے عوام ... تفصیل

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی نیر بخاری نے کہاہے کہ بلاول بھٹو زرداری کو نیب کے ذریعے خوفزدہ نہیں کیا جا سکتا ۔ ایک بیان میں نیر بخاری نے عمران خان کے بیان رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ بلاول بھٹو زرداری ... تفصیل