پشاور دہشتگردی واقعہ میں زخمی ہونے والے لانس نائیک ظفر اقبال شہید              سابق ڈی جی اینٹی کرپشن حسین اصغر کو ڈپٹی چئیرمین نیب لگانے کا فیصلہ              شیخ رشید کا اسد عمر کو منانے کا اعلان              مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے عہدے کی ذمہ داری سنبھال لی              رینٹل پاور ریفرنس میں گرفتار ملزم شاہد رفیع جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے              آمدن سے زائد اثاثے: علیم خان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 30 اپریل تک توسیع              پنجاب حکومت کا بڑا رمضان پیکیج دینے کا اعلان              حکومت ملک میں ویلیو ایڈڈ ٹیکس کے نفاذ کیلئے آئی ایم ایف کی شرط پر رضامند       
تازہ تر ین

2018 پاکستان کیلئے کیسے بہتر رہا؟

اسلام آباد(نیو زڈیسک) پاکستان میں سال 2018 کے دوران پرتشدد واقعات میں ہلاکتوں کی تعداد میں مجموعی طور پر 45 فیصد کمی واقع ہوئی۔ سنٹر آف ریسرچ اینڈ سکیورٹی سٹڈیز ( سی آر ایس ایس ) کی سالانہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سال 2018 کی 2333 حادثاتی اموات میں سے 1131 پر تشدد واقعات میں ہوئیں، جوکہ سال 2017 کے مقابلے میں 45 فیصد کم ہیں، جس میں پرتشدد واقعات میں اموات کی تعداد 2047 تھی۔رپورٹ کے مطابق 2018 کے دوران پرتشدد واقعات میں ہلاکتیں سب سے زیادہ بلوچستان میں 407 رہیں، فاٹا میں یہ تعداد 208 جبکہ سندھ میں 192 رہی۔ پرتشدد واقعات میں ہلاکتوں کی شرح سب سے زیادہ پنجاب میں 69 فیصد کم ہوئی، جہاں تعداد 146 رہی جبکہ 2017 میں یہ تعداد 469 تھی، سندھ میں 57.8 فیصد، فاٹا میں 52.3 فیصد کمی دیکھی گئی۔ سب سے زیادہ اضافہ گلگت بلتستان میں ہوا جہاں 700 فیصد اضافہ ہوا، جہاں 2018 میں 7 افراد پرتشدد واقعات میں ہلاک ہوئے، 2017 میں تعداد صفر تھی۔ خیبر پختونخوا میں 16.1فیصد کمی ہوئی، جہاں 2018 میں 161 ہلاکتیں ہوئی، 2017 میں تعداد 192تھی۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 37.5 فیصد کمی ہوئی، جہاں 2017 میں 16 ہلاکتیں ہوئیں، جبکہ 2018 میں یہ تعداد 10 رہی۔ آزاد جموں و کشمیر میں 2017 کی طرح 2018 میں بھی پرتشدد واقعہ سے کوئی ہلاکت نہیں ہوئی۔ 2018 کے 12 مہینوں میں گزشتہ سال کے مقابلے میں جولائی کے علاوہ پرتشدد واقعات کی تعداد کم رہی۔ خودکش حملوں میں ہلاکتوں کی تعداد میں خاص کمی نہ آئی، یہ حملے 2018 کے دوران ہلاکتوں کی سب سے بڑی وجہ تھے۔ 2018 میں سول ہلاکتوں کی شرح 53 فیصد رہی، جوکہ 2017 میں 47 فیصد تھی۔ سرکاری و سکیورٹی اہلکاروں کی ہلاکتوں میں معمولی کمی دیکھی گئی، یہ تعداد 2018 میں 243 رہی جبکہ 2017 میں 312 تھی۔

مزید خبر یں

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان سے وزیرا علیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار نے ملاقات کر کے صوبے کی سیاسی اور مجموعی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ۔ نجی ٹی وی نے ذرائع کے حوالے سے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے ملاقات میں ... تفصیل

لاہور( نیوزڈیسک )صوبائی وزیر اطلاعات و ثقافت سید صمصام بخاری نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کے نزدیک شخصیات نہیں ملک اہم ہے،وزیراعظم نے ملکی معیشت کو مستحکم بنانے کیلئے بولڈ فیصلہ کیا اوراس فیصلے کے مثبت اثرات مرتب ہوں گے اور جلد مطلوبہ ... تفصیل

اسلام آباد (نیوزڈیسک)وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ کا آئی ایم ایف سے پہلا رابطہ ہوا ہے ،مالیاتی پیکج اور اقتصادی معاملات پر بات چیت ہوئی۔وزارت خزانہ کے مطابق مشیر خزانہ حفیظ شیخ کا آئی ایم ایف کے ڈائریکٹر سے ٹیلی فونک رابطہ ہوا،رابطے ... تفصیل