پشاور: احتجاج کرنے والے ڈاکٹروں کا 2 روز کے لیے او پی ڈی کھولنے کا اعلان              ڈالر کی قدر میں اضافہ، انٹربینک مارکیٹ میں 152 کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گیا              گلگت بلتستان سے بھارتی خفیہ ایجنسی ’را‘ کا نیٹ ورک پکڑا گیا              اسٹیٹ بینک کا نئی مانیٹری پالیسی کا اعلان، شرح سود 12.25 فیصد کردی گئی              نواز شریف کی طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت سماعت کے لئے مقرر,2 رکنی بنچ کل سماعت کرے گا              جعلی ڈگری کیس ،پی آئی اے کے 8 ملازمین کی نظر ثانی و متفرق درخواستیں خارج              حکومتِ پنجاب کا چندہ جمع کرنے والی کالعدم تنظیموں کے خلاف کریک ڈاؤن کا حکم              نواز شریف نے سزا معطلی کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ سے دوبارہ رجوع کر لیا              اپوزیشن کا عید کے بعد حکومت مخالف تحریک کیلیے اے پی سی بلانے کا اعلان       
تازہ تر ین

جو وزیر ملک کےلئے ٹھیک نہیں ہوگا تبدیل کردوں گا، وزیراعظم کا آئندہ بھی کابینہ میں ردو بدل کا اعلان

اورکزئی (نیوز ڈیسک)وزیر اعظم عمران خان نے آئندہ بھی کابینہ میں تبدیلیوں کا اعلان کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ جو وزیر ملک کےلئے ٹھیک نہیں ہوگا اسے تبدیل کردوں گا، ٹیم کا بیٹنگ آرڈر تبدیل کیا ہے، اس وزیر کو لاوں گا جو ملک کےلئے فائدہ مند ہوگا۔اورکزئی میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ قبائلی علاقہ خیبرپختونخوا میں ضم ہوگیا ہے، اب کوشش ہوگی کہ اسے اوپر لائیں، یہاں نوجوانوں کے لیے تعلیمی نظام بہتر کریں اور اس علاقے کو سرمایہ کاری کے لیے کھولیں۔ انہوں نے کہاکہ جب دہشت گردی کیخلاف جنگ شروع ہوئی تو میں واحد سیاستدان تھا جو علاقے میں کھڑا تھا،کسی وزیر اعظم کو قبائلی علاقے کی اتنی سمجھ نہیں جتنی مجھے ہے۔عمران خان نے کہا کہ ان علاقوں سے نقل مکانی کرنے والوں کو جو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا وہ یہاں کے لوگ یا میں جانتا ہوں، میں قبائلی علاقوں میں پھر رہا ہوں کیونکہ ان کے درد کا احساس ہے، پاکستان کا کوئی وزیر اعظم اتنا ان علاقوں میں نہیں گھوما جتنا میں گھوم رہا ہوں۔قبائلی عوام کے عوام کو یقین دلاتے ہوئے انہوں نے کہاکہ جنگ کے دوران جن مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، گھر و کاروبار تباہ ہوئے اس پر ہم آپ کی مدد کریں گے اور یہاں کے عوام کی قربانیوں کو نہیں بھولیں گے۔انہوں نے کہا کہ یہاں کے عوام کے لیے حل یہ ہے کہ ان کی مدد کریں، ان سے ہونے والے ظلم کا معاوضہ دیں، آئی ڈی پیز کو گھر ٹھیک کرنے کےلئے پیسا ادا کریں اور اس کے لیے خیبرپختونخوا حکومت آپ کی مدد کرے گی۔وزیراعظم نے کہا کہ ہماری حکومت نے سیاحت کے فروغ کا فیصلہ کیا ہے اور ان علاقوں میں سیاحت کے لیے سہولت پیدا کرنی ہے کیونکہ اس سے لوگوں کے لیے کاروبار اور نوکریاں بڑھتی ہیں، نوجوانوں کو روزگار ملتا ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ ہمارے ملک میں سیاحت پر توجہ نہیں دی گئی لیکن ہماری حکومت اس پر توجہ دے گی تاکہ لوگوں کو فائدہ ہو، میری حکومت کا سب سے بڑا چیلنج ہے کہ میں نے نوجوانوں کو نوکریاں دینی ہے، انہیں سود کے بغیر قرضے دئیے جائیں گے، اس کے علاوہ ہم نے انہیں ہنر سکھانا ہے، لڑکیوں کو اگر انفارمیشن ٹیکنالوجی سکھادیں تو گھر بیٹھے کام کرسکتی ہیں۔پاکستان کے سیاسی حالات پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ہمارے ملک میں جن لوگوں نے یہاں حکومت کی، جس طرح کی انہوں نے چوری کی اور ملک لوٹا اس سے ملک کا قرضہ 6 ہزار سے 30 ہزار ارب روپے تک پہنچ گیا،60 برس میں پاکستان کا قرض 6 ہزار ارب تھا جبکہ 10 برس میں اسے 30 ہزار ارب تک پہنچا دیا گیا۔پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ان 3 گھروں نے پہلے بھی چوری کی تب انہیں پرویز مشرف نے این آر او دیا اور نواز شریف خاندان کو سعودی عرب جانے دیا اور منی لانڈرنگ کا کیس حدیبہ پیپر ملز بند کردیا۔انہوں نے کہا کہ منی لانڈرنگ سے ملک کو وہ نقصان پہنچا کہ ہمارے پاس پیسا نہیں ہے، اس ملک پر چڑھے قرض پر دن کا 6 ارب روپے سے زیادہ صرف سود دیا جارہا ہے، ملک مقروض ہے تاہم اس طرح ان علاقوں پر پیسہ خرچ نہیں کرسکتا جیسا کرنا چاہیے تھا۔وزیر اعظم نے کہا کہ ہمارے اوپر قرض اس لیے چڑھے کہ پرویز مشرف نے آصف زرداری کو بھی این آر او دیا اور سارے کیسز معاف کردئیے لیکن 2008 میں جب یہ واپس آئے تو ملک پر قرض چڑھنے اور ان کی دولت بڑھنا شروع ہوگئی۔انہوں نے کہا کہ 3 مرتبہ پاکستان کے وزیر اعظم رہنے والے شخص کے بیٹے کہتے ہیں کہ ہم پاکستان کے شہری نہیں اور یہاں جوابدہ نہیں ہیں، اس کے ساتھ ساتھ شہباز شریف کہتے رہے کہ مجھ پر ایک دھیلے کا کرپشن ثابت ہوجائے تو نام بدل دینا لیکن اب ان کے اور ان کے اہل خانہ کی بھی کرپشن سامنے آگئی، یہ ٹی ٹی اسپیشلسٹ بن گئے، پتا نہیں کہاں سے پیسا آرہا ہے ،یہ تینوں خاندان امیر ہوگئے اور ملک مقروض ہوگیا۔عمران خان نے کہاکہ ادھر زرداری اور اومنی گروپ کی دولت بڑھ گئی، ادھر نوازشریف کی نئی کمپنی ہل میٹل کی دولت بڑھی ان کے بچے لندن میں بیٹھ کر ارب پتی بن گئے۔انہوں نے کہا کہ جب سے ہماری حکومت آئی سب پہلے دن سے کہہ رہے ہیں حکومت فیل ہوگئی، زرداری اور اس کا بیٹا کہتے ہیں ہم حکومت ہٹادیں گے، فضل الرحمان بھی حکومت ہٹانے کا کہتے ہیں، ہمیں 8 ماہ ہوئے ہیں، ہم نے ایسا کیا جرم کیا جو حکومت گرادیں گے، ان کو مشکل یہ ہے کہ ہر روز میرے سامنے ان کی کرپشن کی نئی داستانیں آرہی ہیں، انہیں ڈر ہے عمران خان دو سال بھی رہ گیا تو سب جیلوں میں چلے جائیں گے، اس لیے جمہوریت خطرے میں آگئی ہے، حقیقت تو یہ ہےکہ جمہوریت مضبوط ہورہی ہے اور ان کا چوری کیا ہوا پیسہ خطرے میں آگیا ہے۔انہوں نے کہاکہ حکومت کے پاس پیسے ہوتے تو کمزور طبقوں کو اٹھاتے اور قبائلی علاقے کے نوجوان کیسے تعلیم اورنوکریاں حاصل کریں، نوجوانوں کو نوکریاں دینا میری حکومت کا سب سے بڑاچیلنج ہے ۔وزیراعظم عمران خان نے کابینہ میں تبدیلیوں کا ذکر کیا اور واضح کیا کہ آگے مزید تبدیلیوں کا اشارہ دیا۔انہوں نے کہاکہ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان اور عثمان بزدار سے کہتا ہوں کہ وہ اپنی ٹیم پر نظر رکھیں، اچھا کپتان مسلسل اپنی ٹیم کی طرف دیکھ رہا ہوتا ہے کیونکہ اچھے کپتان نے میچ جیتنا ہوتاہے، کئی مرتبہ اسے جیتنے کےلئے بیٹنگ آرڈر بدلنا پڑتا ہے، کئی مرتبہ ٹیم میں نئے کھلاڑی لانا پڑتے ہیں۔عمران خان نے کہا کہ کپتان کا مقصد ٹیم کو جتانا ہوتا ہے اور بطور وزیراعظم میرا مقصد اپنی قوم کو جتانا ہے، میں اللہ کو جواب دہ ہوں، ابھی بھی اپنی ٹیم میں بیٹنگ آرڈر تبدیل کیا ہے اور آگے بھی کروں گا، سارے وزیروں کو کہتا ہوں جو میرے ملک کے لیے فائدہ مند نہیں ہوگا اسے تبدیل کرکے اسے لاوں گا جو ملک کے لیے فائدہ مند ہوگا، کوئی کھلاڑی صحیح پرفارمنس نہیں دے رہا تو بیٹنگ آرڈر میں تبدیلی کے لیے تیار ہونا چاہیے یا اس کی جگہ نیا کھلاڑی لائیں۔

مزید خبر یں

کراچی (نیوزڈیسک) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکمرانوں کی ناقص پالیسیوں اور بد اعمالیوں کے باعث وسائل سے مالا مال اور بہترین افرادی قوت کی صلاحیت کا حامل ملک بیرونی قرضوں میں جکڑا ہوا ہے۔جماعت اسلامی ضلع شرقی کے تحت ... تفصیل

پشاور(نیوز ڈیسک) وفاقی وزیر برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت آنے سے عوام کے مسائل بتدریج حل ہورہے ہیں ۔ کھلی کچہریوں کے انعقاد سے سرکاری افسران عوام کے سامنے بٹھا کر ان کے اہم مسائل کے حوالے ... تفصیل

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ اگر میڈیا گرے گا تو ریاست کا چوتھا ستون ہونے کی وجہ سے ریاست کو بھی نقصان ہوگا۔معاون خصوصی وزیراعظم برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس ... تفصیل