حکومت کا سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کیلئے اوپن بیلٹ کا فیصلہ
جی 20 سے پاکستان کو قرضوں کی ادائیگی میں 2 ارب ڈالر سے زائد ریلیف ملنے کا امکان
سعودی عرب میں کوڑے مارنے کی سزا کو باضابطہ ختم کردیا گیا
سٹیزن پورٹل سے شہری غیر مطمئن، وزیراعظم کا اداروں کیخلاف تحقیقات کا حکم
کورونا نے پی ٹی آئی کی رکن اسمبلی شاہین رضا کی جان لے لی
ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کو کورونا وباء سے بچاؤ کیلئے 30 کروڑ ڈالر کا قرض فراہم کر دیا
حکومت بلوچستان نے اسمارٹ لاک ڈاؤن میں 2 جون تک توسیع کردی
پاکستان میں 2 ماہ بعد ریلوے آپریشن بحال کر دیا گیا
کرونا وبا،ملک میں 1ہزار سے زائد اموات،مریضو ں کی تعداد47ہزار سے تجاوز کر گئی،13ہزار سے زائدصحتیاب
تازہ تر ین

سپریم کورٹ نے ریاست مخالف تقریر کرنے والے طالب علم عالمگیر خان کی ضمانت منظور کرلی

اسلام آباد (نیوزڈیسک)سپریم کورٹ نے ریاست مخالف تقریر کرنے والے طالب علم عالمگیر خان کی ضمانت منظور کرلی ۔ جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے سماعت کی۔ وکیل ملزم نے کہاکہ میرا موکل پنجاب یونیورسٹی کا طالب علم ہے۔ جسٹس عمر عطاء بندیال نے کہاکہ ملزم نے ریاست مخالف تقریر کیوں کی کیا یہ اسٹوڈنٹ لیڈر ہے۔ وکیل ملزم نے کہاکہ میرا موکل محرومی کا شکار ہے، جذبات ہیں ریاست مخالف نہیں۔ جسٹس قاضی امین نے کہاکہ ہم آزادی اظہار رائے پر مکمل یقین رکھتے ہیں، آزادی اظہار رائے پر قدغن نہیں ہے۔جسٹس قاضی محمد امین نے کہاکہ طالب علم کو اپنی پڑھائی پر توجہ دینا چاہیے، طلبا کو سیاست کا ایندھن نہیں بنتا چاہیے۔ وکیل نے کہاکہ میرے موکل نے حکومتی کارکردگی پر تقید کی، ریاست مخالف مقدمہ نہیں بنتا۔ جسٹس قاضی امین نے کہاکہ ریاست اور حکومت میں فرق ہوتا۔ وکیل نے کہاکہ ملک میں ہر کوئی حکومت پر تنقید کرتاوکیل نے کہاکہ ملک میں سیاست دان ایک دوسرے کو چور ،ڈاکو, لٹیرا تک کہتے ہیں یہ تو طالب علم ہے۔ جسٹس قاضی امین نے کہاکہ طالب علم ہونا ملزم کا کیس میں دفاع نہیں ہے، طلبا قانون سے بالا تر نہیں ہوتے، ہمارے لیے یہ ملزم ایک عام شہری ہے۔وکیل نے کہاکہ مانتا ہوں اسٹوڈنٹ کو بھی زمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔ جسٹس قاضی امین نے کہاکہ ریاست اتنی کمزور نہیں کہ ایک تقریر سے لڑ کھڑا جائے ،آج ہم کھڑ ے ہیں تو مذاکرات اور اختلاف رائے کی وجہ سے ہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں اظہار رائے کا احترام کرنا ہوگا، یہ جو کچھ ہو رہا ہے مناسب نہیں ہے،یونیورسٹی اور کالجز میں رائے بنتی ہے۔ جسٹس عمر عطاء بندیال نے کہاکہ ناپسندیدگی اور غیر مطمئن ہونے کا اظہار کرنا ہر شہری کا حق ہے، عوام کا حکومت پر اعتماد ہونا چاہیے ،لوگ غصہ میں کئی باتیں کر جاتے ہیں۔جسٹس عمر عطا بندیال نے کہاکہ کیا طالبعلم جو چاہے وہ کر سکتا ہے،عدالت کو کوئی یقین دہانی چاہیے کہ آئندہ ملزم صرف تعلیم پر توجہ دے گا۔ وکیل ملزم نے کہاکہ ملزم کا والد طالبان نے مار دیا، ملزم بہت محرومیوں کا شکار ہے، ملزم کی طرف سے یقین دلاتا ہوں آئندہ ایسی تقریر سے باز رہے گا۔وکیل یقین دہانی پر عدالت نے ملزم کی ضمانت منظور کر لی۔ ملزم پر 29 نومبر 2019 کو لاہور میں ریاست مخالف تقریر کا الزام ہے۔

مزید خبر یں

اسلام آباد (نیوزڈیسک)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ یورپ، امریکا اور چین کے مقابلے میں ہمیں کورونا کے ساتھ غربت کا بھی سامنا ہے، معاشی بہتری کیلئے مشکل فیصلے کیے تاہم وبا کی وجہ سے توازن نہیں رہا،ہمیں کرنٹ خسارے سمیت مالی خسارے کا سامنا ... تفصیل

اسلام آباد (نیوزڈیسک)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ صحت کے شعبے پر توجہ نہ دینے کے باعث کورونا کی وبا ہمارے لیے بڑا چیلنج ہے، ویکسین بننے تک ہمیں کورونا کے ساتھ ہی گزارا کرنا ہوگا،کورونا وائرس کا حقیقی حل ویکسین ہی ہے، صحت کے ... تفصیل

اسلام آباد (نیوزڈیسک)تحریک انصاف کی حکومت نے سینیٹ کے انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کے لیے وزیر اعظم کے انتخاب کی طرز پر اوپن بیلٹ کے ذریعے سینیٹ چیئرمین کے انتخابات کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور وفاقی ویزر برائے نارکوٹکس ... تفصیل

Columns