حکومت کا سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کیلئے اوپن بیلٹ کا فیصلہ
جی 20 سے پاکستان کو قرضوں کی ادائیگی میں 2 ارب ڈالر سے زائد ریلیف ملنے کا امکان
سعودی عرب میں کوڑے مارنے کی سزا کو باضابطہ ختم کردیا گیا
سٹیزن پورٹل سے شہری غیر مطمئن، وزیراعظم کا اداروں کیخلاف تحقیقات کا حکم
کورونا نے پی ٹی آئی کی رکن اسمبلی شاہین رضا کی جان لے لی
ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کو کورونا وباء سے بچاؤ کیلئے 30 کروڑ ڈالر کا قرض فراہم کر دیا
حکومت بلوچستان نے اسمارٹ لاک ڈاؤن میں 2 جون تک توسیع کردی
پاکستان میں 2 ماہ بعد ریلوے آپریشن بحال کر دیا گیا
کرونا وبا،ملک میں 1ہزار سے زائد اموات،مریضو ں کی تعداد47ہزار سے تجاوز کر گئی،13ہزار سے زائدصحتیاب
تازہ تر ین

کرونا وائرس، وزیر اعظم کااقدامات مزید مؤثر بنانے کیلئے ٹائیگر فورس بنانے اور ریلیف فنڈ قائم کرنے کا اعلان

اسلام آباد (نیوزڈیسک) وزیر اعظم عمران خان نے کورونا وائرس کے خلاف اقدامات کو مزید مؤثر بنانے کیلئے ٹائیگر فورس بنانے اور ریلیف فنڈ قائم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ صرف وسائل سے یہ جنگ نہیں جیتی جاسکتی ہے، ہمیں یہ جنگ حکمت سے لڑنی ہے اور اپنے ملک کے حالات کو دیکھ کر چلنا ہے،ٹائیگر فورس فوج اور انتظامیہ کے ساتھ مل کر وبا کے پھیلائو کی صورت میں مقابلہ کرے گی،جن علاقوں میں لاک ڈائون کرنا پڑے گا تو یہ فورس خوراک اور آگاہی کی فراہمی میں مدد فراہم کرے گی،ذخیرہ اندوزوں کی وجہ افراتفری پھیلتی ہے اور اشیا کی قیمتیں اوپر جاتی ہیں جس سے غریبوں کو نقصان ہوتا ہے ، جو اس وقت سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں ان سے ریاست سخت کارروائی کریگی اور عبرت ناک سزائیں دلوائے گی ۔پاکستان ٹیلی ویژن اور سرکاری ریڈیو پر قوم سے خطا ب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہاکہ اس وقت آپ دیکھ رہے ہونگے کہ ساری دنیا کرونا وائرس کی جنگ لڑ رہی ہے اور ہر ملک اپنی کپیپسٹی کے مطابق لڑ رہا ہے ،اس وقت ایک ملک چین کامیاب ہوا ہے ، چین نے اپنے شہر ووہان میں دو کروڑ لوگوں کو بند کر دیا ، لاک ڈائون کر کے انہوں نے آج کرونا وائرس پر قابو پالیا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہاکہ اگر ہمارے بھی چائنا کے حالات ہوتے تو میں آپ کو یقین سے کہتا ہوں کہ آج میں پاکستان کے شہروں کو بند کر دیتا ، سب مکمل طورپر بند کردیتا لیکن ہمارا مسئلہ یہ ہے کہ 25فیصد ہماری آبادی شدید غربت میں رہتی ہے مطلب ایسے گھرانے ہیں جو دو وقت کی روٹی بھی نہیں کھاسکتے اور اس کے اوپر بیس فیصد ایسے لوگ ہیں جو غربت کی لکیر کے ارد گرد ہیں یعنی اگر ایک جھٹکا پڑتا ہے تو وہ بھی اس کے نیچے آسکتے ہیں ۔وزیر اعظم نے کہاکہ ہم تقریباً آٹھ ، نو کروڑ لوگوں کی بات کررہے ہیں ،اگرہم لاک ڈائون کرتے ہیں اور ان لوگوں کا دھیان نہیں کر سکتے ہیں جو بالکل بے روز گار ہو کر گھروں میں بیٹھ جاتے ہیں ،جن کے پیسے کھانا پینا نہیں ہوتا تو ذہن میں ڈال لیں اس طرح کوئی کسی قسم کا لاک ڈائون کامیاب نہیں ہوسکتا ۔وزیر اعظم نے کہاکہ اگر ہم لاک ڈائون کریں اور ہماری کچی آبادیوں کے اندر ایک ایک کمرے میں سات ، آٹھ لوگ بند ہو جائیں اور ان کو کھانا بھی نہ پہنچا سکیں ،ایسے کوئی لاک ڈائون کامیاب نہیں ہوگا ۔وزیر اعظم نے کہاکہ اگر کسی کا خیال ہے ہمارے ڈیفنس یا اسلام آباد کے بڑے سیکٹر کے لوگ بند ہو جائیں تو لاک ڈائون کامیاب ہو جائیگا ، یہ کبھی کامیاب نہیں ہوگا ۔ وزیراعظم نے کہاکہ یہ اس لئے کامیاب نہیں ہوگا کہ یہ ایک ایسی بیماری ہے جو غریب اور امیر میں فرق نہیں کرتی ۔اگر غریب علاقوں کے اندر لوگوں نے لاک ڈائون نہ مانا اور وہاں ملتے رہے اور ویسے بھی مشکل میں قریب قریب سات ، اٹھ لوگ ایک کمرے میں رہ رہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ برطانیہ کے وزیر اعظم کو کرونا وائرس ہوگیا ہے یہ بیماری فرق نہیں کرتی اس لئے ساری قوم ملکر اس وائرس کے خلاف جنگ لڑ کر جیت سکتی ہے نہ کوئی حکومت جیت سکتی ہے ۔ وزیر اعظم نے کہاکہ اگر امریکہ کا یہ حال ہے تو خود ہی سمجھ جائیں کہ صرف وسائل سے کبھی بھی جنگ نہیں جیت سکتے ہیں ،ساری قوم ملکر لڑتی ہے تو پھر ہی جنگ جیت سکتی ہے ۔ وزیر اعظم نے کہاکہ ہمارے ہمسائیہ کے ملک نے فیصلہ کیا کہ سارے ہندوستان کو وہ لاک ڈائون کر دینگے آج وہاں حالات دیکھ لیں گے ان کے وزیر اعظم نے قو م سے معافی مانگی ہے ،معافی یہ مانگی ہے کہ ہم نے سوچے سمجھے بغیر لاک ڈائون کر دیا تھا ،ہندوستان کا مسئلہ یہ ہے کہ اگر وہ اس لاک ڈائون کو ہٹاتے ہیں تو کرونا پھیل جاتا ہے کیونکہ عوام سڑکیوں پر آجائیں گے ،کامیاب شروع کر دینگے ،اگر لاک ڈائون کو رکھتے ہیں تو خدشہ ہے لوگ بھوک سے مر جائینگے آج بھی لوگ سڑکوں پر ہیں ، اس لئے آج سب کو کہنا چاہتا ہوں کہ یہ جنگ حکمت سے لڑنی ہے ،سب سے پہلے حکمت استعمال کر نی ہے ،اپنے ملک کے حالات کیا ہیں ؟سب سے بڑا سوال یہ ہے کہ جب ہم ملک کو لاک ڈائون کرینگے تو کیا وہاں کے لوگوں کو گھروں میں کھانا پہنچا سکیں گے اگر ہم یہ نہیں کر سکتے تو یہ لاک ڈائون کامیاب نہیں ہوگا ،ہم نے سوچا ہماری طاقت کیا ہے ؟کیا ہم وسائل سے یہ لڑسکتے ہیں ۔ ہم نے اپنے بڑی مشکلوں سے پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑ ا ریلیف پیکج دیا ہے وہ تقریباً آٹھ ارب ڈالر بنتا ہے امریکہ نے 2ہزار ار ب ڈالر کا ریلیف پیکج دیا ہے ظاہر ہے ہمارے پاس وسائل نہیں ہیں ، ہمارے پاس دو چیزیں ہیں ،سب سے بڑی چیزہمارے پاس ایمان ہے ،ایمان کی وجہ سے پاکستانی قوم سب سے زیادہ خیرات دیتی ہے ،دوسری چیز ہماری نو جوان آبادی ہے ،دنیا کے دوسرے نمبر پر ہماری نو جوان آبادی ہے ،ہم نے ان دو طاقتوں کااستعمال کر نا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہاکہ کرونا کی ریلیف کیلئے ٹائیگر فورس کااعلان کررہا ہوں ،یہ نوجوانوں کی فورس ہوگی جو انشاء اللہ ہماری کمی پوری کریگی، ہماری فوج اور ایڈمنسٹریشن کے ساتھ ملکر کام کریگی۔

مزید خبر یں

اسلام آباد (نیوزڈیسک)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ یورپ، امریکا اور چین کے مقابلے میں ہمیں کورونا کے ساتھ غربت کا بھی سامنا ہے، معاشی بہتری کیلئے مشکل فیصلے کیے تاہم وبا کی وجہ سے توازن نہیں رہا،ہمیں کرنٹ خسارے سمیت مالی خسارے کا سامنا ... تفصیل

اسلام آباد (نیوزڈیسک)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ صحت کے شعبے پر توجہ نہ دینے کے باعث کورونا کی وبا ہمارے لیے بڑا چیلنج ہے، ویکسین بننے تک ہمیں کورونا کے ساتھ ہی گزارا کرنا ہوگا،کورونا وائرس کا حقیقی حل ویکسین ہی ہے، صحت کے ... تفصیل

اسلام آباد (نیوزڈیسک)تحریک انصاف کی حکومت نے سینیٹ کے انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کے لیے وزیر اعظم کے انتخاب کی طرز پر اوپن بیلٹ کے ذریعے سینیٹ چیئرمین کے انتخابات کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور وفاقی ویزر برائے نارکوٹکس ... تفصیل

Columns